Tuesday , October 17 2017
Home / ہندوستان / امریکی فرم سے رشوت لینے کے الزام میں گوا پولیس کی کارروائی

امریکی فرم سے رشوت لینے کے الزام میں گوا پولیس کی کارروائی

سابق وزیر گرفتار اور سابق چیف منسٹر کو گرفت میں لینے کی کوشش
پناجی۔/6اگسٹ، ( سیاست ڈاٹ کام ) گوا پولیس نے آج لوئیس برگر رشوت ستانی کیس کے سلسلہ میں سابق وزیر تعمیرات عامہ ( پی ڈبلیو ڈی ) چرچل الیماؤ کو گرفتار کرلیا ہے جبکہ سابق چیف منسٹر ڈگمبر کامت کو ان کی درخواست ضمانت قبل از گرفتاری کی مخالفت کرتے ہوئے گرفتارکرنے کی تیاری میں ہے۔66سالہ چرچل الیماؤ کو جنہیں گوا پولیس کی کرائم برانچ نے جنوبی گوا کے ایک گاؤں اگاسیم سے حراست میں لے کر کل رات اپنی تحویل میں رکھا ، انہوں نے یہ ادعا کیا کہ وہ بے قصور ہیں اور ان کی گرفتاری سیاسی محرکات پر مبنی ہے۔تاہم ریاست میں بی جے پی کی زیر قیادت حکومت کے چیف منسٹر لکشمی کانت پر سیکر نے چرچل کے الزامات کو مسترد کردیا ہے اور بتایا کہ پولیس نے اچھا کام کیا ہے اور کسی کو بھی بخشا نہیں جائے گا جبکہ پولیس نے دعویٰ کیا ہے کہ الیماؤ کو ٹھوس ثبوت کی بنیاد پر گرفتار کیا گیا ہے۔ پولیس کرائم برانچ کے ایک سینئر عہدیدار نے اپنا نام مخفی رکھنے  کی شرط پر بتایا کہ اس کیس میں گرفتار دیگر ملزمین سے پوچھ تاچھ میں قابل گرفتار ثبوت دستیاب ہونے پر الیماؤ کو حراست میں لیا گیا ہے اور ہمیں سابق چیف منسٹر کامت سے بھی پوچھ تاچھ کی ضرورت ہے۔ مسٹر کامت جو پیشرو کانگریس حکومت میں وزیر تھے  پناجی کی عدالت میں درخواست ضمانت قبل از گرفتاری داخل کی ہے جس پر کل سماعت ہوگی۔ پولیس عہدیدار نے بتایا کہ عدالت میں کامت کی درخواست ضمانت کی شدید مخالفت کی جائے گی۔ مسٹر چرچل الیماؤ واحد سیاستداں ہیں جنہیں رشوت ستانی کیس کے سلسلہ میں گرفتار کیا گیا ہے۔ گزشتہ ہفتہ پولیس نے کامت کے علاوہ الیماؤ سے دو مرتبہ پوچھ تاچھ کی تھی جبکہ ڈگمبر کامت سال2007ء سے 2012ء تک ریاست کے چیف منسٹر تھے۔قبل ازیں کرائم برانچ نے مذکورہ کیس میں آنندوا چاسندر سابق ڈائرکٹر JICA۔امدادی پراجکٹ برائے گوا اور لوئیس برگر کے سابق نائب صدر برگر سیتکم مہنتی کو گرفتار کیا تھا۔ یہ اسکینڈل نیوجرسی میں واقع کنسلٹنسی فرم سے جس نے جاپان انٹرنیشنل کوآپرییشن ایجنسی فنڈنگ کے تحت واٹر پراجکٹ کیلئے کنسلٹنسی حاصل کرنے کیلئے بھاری رشوت دی تھی۔

TOPPOPULARRECENT