Saturday , September 23 2017
Home / دنیا / امریکی فوجداری نظام انصاف غیرمنصفانہ

امریکی فوجداری نظام انصاف غیرمنصفانہ

بامعنی اصلاحات ناگزیر ، اوباما کا قوم سے خطاب
واشنگٹن ۔ 17 اکٹوبر۔(سیاست ڈاٹ کام) امریکہ میں فوجداری نظام انصاف میں بامعنی اصلاحات کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے صدر بارک اوباما نے کہاکہ امریکہ میں فی الحال 2.2 لاکھ مجرمین مختلف جیلوں میں قید ہیں جس کے مقابلہ 30 سال قبل صرف پانچ لاکھ مجرمین امریکی جیلوں میں قید تھے ۔ صدر اوباما نے ویب اور ریڈیو کے ذریعہ قوم سے ہفتہ وار خطاب کے دوران کہا کہ عالمی آبادی کا پانچ فیصد حصہ امریکہ میں ہے لیکن قیدیوں کی عالمی تعداد کے اعتبار سے 25 فیصد قیدی امریکہ میں ہیں۔ ان قیدیوں کو جیل میں رکھنے کیلئے امریکہ سالانہ 81 ارب ڈالر صرف کرتا ہے ۔ اس کے مقابلہ ہندوستان کا دفاعی بجٹ 40 ارب ڈالر پر مشتمل ہے اور وہاں ( ہندوستان میں ) صرف تین لاکھ 30 ہزار افراد جیلوں میں قید ہیں۔ عالمی اعداد کے مطابق دنیا بھر کے مختلف ممالک کی جیلوں میں 90 لاکھ قیدی ہیں۔ جن کے منجملہ 50 فیصد امریکی ، روسی اور چینی جیلوں میں ہیں۔ امریکہ میں قیدیوں کی شرح دنیا بھر میں سب سے زیادہ ہے ۔ جہاں ہر 100,000 امریکیوں میں 724 قیدی ہیں۔ صدر اوباما نے کہاکہ گزشتہ چند دہائیوں کے دوران اکثر ایسے افراد کو سلاخوں کے پیچھے ڈال دیا گیا جو تشدد پر مبنی جرائم میں ملوث نہیں ہیں۔

TOPPOPULARRECENT