Thursday , September 21 2017
Home / ہندوستان / امریکی فوج میں 5896 مسلمان پنٹگان کا انکشاف

امریکی فوج میں 5896 مسلمان پنٹگان کا انکشاف

مادر وطن کی حفاظت کیلئے عظیم خدمات اور قربانیوں کا اعتراف
نئی دہلی ۔ 11 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) دین اسلام اور مسلمانوں کے بارے میں غلط فہمیاں اور افواہیں پھیلانے کے باوجود دامن اسلام میں پناہ لینے والوں کی تعداد میں روز بروز اضافہ ہوتا جارہا ہے۔ چنانچہ عالمی سطح پر جن مذاہب میں لوگ جوق درجوق شامل ہو رہے ہیں ان تمام میں دین اسلام سرفہرست ہے۔ پیرس میں دہشت گردوں کے حملوں اور پھر اس کے بعد ایک امریکی مسلم جوڑے کی کیلیفورنیا میں اندھادھند فائرنگ میں 14 امریکیوں کی ہلاکت کے بعد امریکہ میں ہی کچھ عناصر امریکی مسلمانوں کے بارے میں متعصب اور نسل پرستانہ خیالات کا اظہار کررہے ہیں ۔ ان میں امریکی صدارت پر فائز ہونے کے خواہاں اور ری پبلکن پارٹی کے صدارتی امیدوار کی دوڑ میں شامل ڈونالڈ ٹرمپ بھی شامل ہیں، لیکن انہیں اندازہ نہیں کیا کہ امریکی زندگی کے ہر شعبہ میں مسلمان کافی اہم رول ادا کررہے ہیں۔ امریکی فوج میں بھی مسلمان اپنی موجودگی کا احساس دلاچکے ہیں جس کا ثبوت پنٹگان (امریکی محکمہ دفاع) کی جانب سے جاری کردہ اعداد و شمار ہیں پنٹگان کے مطابق مسلمانوں نے نہ صرف سرزمین امریکہ کے تحفظ میں اہم رول ادا کیا ہے اور کررہے ہیں بلکہ جنگ زدہ ملکوں میں امریکی سپاہیوں کی حیثیت سے امریکی مفادات کے تحفظ میں کوئی کسر باقی نہیں رکھ رہے ہیں۔ مسلمانوں نے امریکہ کی تمام جنگوں بشمول خانہ جنگی، پہلی جنگ عظیم، دوسری جنگ عظیم اور ویتنام جنگ میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیا۔ حالیہ عرصہ کے دوران مسلم امریکی سپاہیوں نے خلیجی جنگ، عراق جنگ اور افغانستان جنگ میں خدمات انجام دیں، جہاں تک امریکی فوج کی تعداد کا سوال ہے فی الوقت اس میں تقریباً 2.2 ملین سرگرم فرائض دینے والے اور ریزرو  سپاہی شامل ہیں جن میں سے 5896 نے خود کی مسلمان کی حیثیت سے شناخت کی ہے۔ اے بی سی نیوز کے مطابق بری فوج میں 3550 مسلمان خدمات انجام دے رہے ہیں۔ بحریہ میں ان کی تعداد 1036، فضائیہ میں 765 ہے اور خصوصی افواج میں 545 مسلم عہدہ دار اپنی نمایاں خدمات کے ذریعہ ملک کی خدمت کررہے ہیں۔ ڈپارٹمنٹ آف ڈیفنس کے مطابق جملہ 1,313,940 سرگرم ڈیوٹی انجام دینے والے اور 826,106 گارڈ و ریزرو ارکان میں سے 5896 نے خود کو مسلمان بتایا ہے۔ ڈپارٹمنٹ آف ڈیفنس سرویس ممبرس کو اپنے مذہبی شناخت ظاہر کرنے کا موقع اس لئے فراہم کرتا ہے تاکہ موت کی صورت میں ان کی تجہیز و تکفین کا انتظام کیا جاسکے۔ یہ بات بھی اہم ہے کہ 2.2 ملین امریکی سپاہیوں میں سے 4 لاکھ سپاہی ایسے بھی ہیں جنہوں نے اپنے مذہب یا عقیدہ کا اعلان نہیں کیا۔ ہوسکتا ہے کہ امریکی فوج میں مسلمانوں کی تعداد اس سے بھی کہیں زیادہ ہو۔

TOPPOPULARRECENT