Friday , August 18 2017
Home / شہر کی خبریں / امریکی یونیورسٹیز میں آندھراپردیش اور تلنگانہ کے 27000 طلبہ

امریکی یونیورسٹیز میں آندھراپردیش اور تلنگانہ کے 27000 طلبہ

حیدرآباد ۔ 4 ۔ دسمبر : ( سیاست ڈاٹ کام ) : امریکی یونیورسٹیز سے ہندوستانی طلبہ کی ایک کثیر تعداد تعلیم حاصل کررہی ہے۔ خاص طور پر ٹیکساس، نیویارک اور کیلیفورنیا میں ہندوستانی کثیر تعداد میں مقیم ہیں۔ تعلیمی سال 2014-15 کیلئے امریکہ گئے زیادہ تر ہندوستانی طلبہ نے مذکورہ امریکی ریاستوں کو ترجیح دی جبکہ ہندوستانی ریاستوں میں آندھراپردیش۔تلنگانہ ایسی ریاستیں ہیں جہاں سے سب سے زیادہ تعداد میں طلبہ نے امریکی یونیورسٹیز میں داخلے لئے ہیں۔ ہندوستانی طلبہ کی پسندیدہ منزل امریکی ریاست ٹیکساس ہے۔ یہ امریکہ کی تیسری بڑی ریاست ہے جو بین الاقوامی طلبہ میں کافی مقبول ہے۔ بین الاقوامی طلبہ کے تبادلہ سے متعلق 2015ء اوپن ڈورس رپورٹ میں یہ بات بتائی گئی ہے۔ اوپن ڈور دراصل امریکہ میں طلبہ کا سرکاری ڈاٹا ہے۔ ٹیکساس کی مختلف یونیورسٹیز میں تعلیم حاصل کررہے جملہ 75588 بین الاقوامی طلبہ میں کم از کم 23.5 فیصد ہندوستانی ہیں۔ اس ریاست میں یونیورسٹی آف ٹیکساس۔ ڈلاس، یونیورسٹی آف ٹیکساس۔ آسٹن اور یونیورسٹی آف ہوسٹن جیسی باوقار جامعات ہیں۔ جملہ بین الاقوامی طلبہ 106758 میں سے 14.1 فیصد طلبہ امریکی ریاست نیویارک میں زیر تعلیم ہیں۔ ہندوستانی طلبہ کے لئے یہ دوسری پسندیدہ ریاست ہے۔ اس طرح بین الاقوامی طلبہ کے لئے بھی یہ دوسری پسندیدہ ریاست ہے۔ اوپن ڈورس رپورٹ کے بموجب نیویارک یونیورسٹی، کولمبیا یونیورسٹی اور کارنیل یونیورسٹی جیسی جامعات طلبہ کو نیویارک اسٹیٹ کی طرف کھینچ لاتے ہیں۔ ہندوستانی اور بین الاقوامی طلبہ کی پسند کے لحاظ سے تیسرا نمبر کیلیفورنیا کا ہے۔ لیکن بین الاقوامی طلبہ کی تعداد کے لحاظ سے یہ سب سے بڑی ریاست ہے جہاں 135130 بین الاقوامی طلبہ تعلیم حاصل کررہے ہیں۔ ان میں 8.1 فیصد طلباء و طالبات ہندوستان سے تعلق رکھتے ہیں جبکہ چینی طلبہ کی تعداد 33.6 فیصد بتائی جاتی ہے۔ یونیورسٹی آف سدرن کیلیفورنیا، یونیورسٹی آف کیلیفورنیا، برکلے اور یونیورسٹی آف کیلیفورنیا۔ لاس اینجلس طلبہ کی ترجیحی یونیورسٹیز میں شامل ہیں۔ دیگر ریاستوں میں ہندوستانی طلبہ کی تعداد اس طرح ہے: الینوائے (6.6 فیصد) میسوچٹس (5.2 فیصد) پنسلوانیا (4.9 فیصد) اوہائیو (4.3 فیصد) اور فلوریڈا (3.4 فیصد)۔ لائیومنٹ میں شائع ایک رپورٹ کے مطابق 5 سال کے بعد ہندوستانی طلبہ کی تعداد میں 30 فیصد اضافہ ہوا ہے۔ سال2013-14 میں 102673 طلبہ امریکی یونیورسٹیز میں اپنے نام درج کروائے تھے۔ سرکاری ڈاٹا کے مطابق یہ تعداد سال 2014-15 میں بڑھ کر 132888 ہوگئی۔ امریکی یونیورسٹیز میں تعلیم حاصل کررہے ہندوستانی طلبہ میں 27000 کا تعلق آندھراپردیش، تلنگانہ  سے ہے اور 25000 طلبہ ممبئی علاقہ (اس کے اطراف و اکناف کے شہروں) سے تعلق رکھتے ہیں جبکہ 11000 طلبہ کا تعلق دہلی سے ہے۔ سال 2014-15 میں امریکہ نے 974926 بین الاقوامی طلبہ کی میزبنانی کی جو پچھلے سال سے 10 فیصد زیادہ ہے۔ اوپن ڈور رپورٹ میں یہ بھی انکشاف کیا گیا کہ بین الاقوامی طلبہ کے باعث امریکی حکومت کو 30.5 ارب ڈالرس کی کثیر آمدنی ہوئی ہے جس میں ایک اندازہ کے مطابق ہندوستانی طلبہ کے باعث امریکی معیشت کو 3 ارب ڈالرس کا سہارا ملا ہے۔

TOPPOPULARRECENT