Saturday , October 21 2017
Home / عرب دنیا / امن مذاکرات میں شریک ہونے طالبان کو پاکستان کا انتباہ

امن مذاکرات میں شریک ہونے طالبان کو پاکستان کا انتباہ

اسلام آباد ۔ 18 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) افغان حکومت کے ساتھ امن مذاکرات میں شرکت سے طالبان کے انکار کے بعد پاکستان نے شورش پسندوں کو انتباہ دیا ہیکہ وہ فوری طور پر اپنے ’’موسم بہار کے حملوں‘‘ کو مسدود کردیں یا پھر سنگین حالات کا سامنا کرنے تیار رہیں۔ میڈیا میں گشت کررہی ایک رپورٹ میں یہ بات کہی گئی۔ یاد رہیکہ طالبان کے جاریہ ماہ کے اوائل میں آپریشن عمری کا اعلان کیا تھا جو دراصل طالبان کے مرحوم بانی ملامحمد عمر سے موسوم ہے جس کا مقصد یہ ہیکہ مغرب کی تائید والی افغان حکومت کو اقتدار سے بیدخل کیا جائے۔ طالبان کے اس اعلان نے کہ وہ اپنے روایتی حملوں کا سلسلہ جاری رکھے گا جس میں گوریلا حملے بھی شامل ہیں، پاکستان میں سب کو حیرت زدہ کردیا تھا۔ دی ایکسپریس ٹریبون نے تحریرکیا ہیکہ طالبان کے اس اعلان سے مذاکرات کے جو چار رخی اقدامات کئے گئے ہیں، وہ کھٹائی میں پڑ سکتے ہیں جن میں پاکستان، افغانستان، چین اور امریکہ شامل ہیں۔ چار رخی کوآرڈینیشن گروپ کو (QCG) کہا جاتا ہے جس کی کوشش یہ ہیکہ افغان حکومت اور طالبان کے درمیان راست مذاکرات کروائے جائیں۔ میڈیا رپورٹ میں جس افسر کا حوالہ دیا گیا ہے اس کا کہنا ہیکہ پاکستان نے طالبان کو انتباہدیا ہیکہ وہ ہر قسم کے تشدد سے باز آجائے اور مذاکرات کی میز پر آئے اور یہی وجہ ہیکہ اس کے باوجود طالبان کے موسم بہار کے حملوں کے اعلان نے پاکستان کو کسی حد تک مایوس کیا۔

TOPPOPULARRECENT