Wednesday , September 27 2017
Home / شہر کی خبریں / امن و ضبط کی بحالی حکومت کی اولین ترجیح

امن و ضبط کی بحالی حکومت کی اولین ترجیح

حیدرآباد۔/19 ڈسمبر، ( سیاست نیوز) وزیر انفارمیشن ٹکنالوجی کے ٹی راما راؤ نے کہا کہ حیدرآباد میں امن و ضبط کی بحالی حکومت کی اولین ترجیح ہے اور اس سلسلہ میں محکمہ پولیس کو تمام عصری آلات سے لیس کیا جارہا ہے۔ کے ٹی آر نے آج چندا نگر پولیس اسٹیشن کے حدود میں نئے نصب کردہ 77 سی سی ٹی وی کیمروں کا افتتاح کیا۔ اس موقع پر مخاطب کرتے ہوئے کے ٹی آر نے کہا کہ حیدرآباد میں جملہ 10,000 سی سی ٹی وی کیمرے نصب کئے جارہے ہیں تاکہ امن و ضبط کی صورتحال پر قابو پانے میں مدد ملے۔ انہوں نے کہا کہ شہر کا کوئی بھی علاقہ پولیس کی نگاہ سے اوجھل نہیں رہے گا اور سی سی کیمروں کے ذریعہ غیر سماجی عناصر کی سرگرمیوں پر نظر رکھنے میں مدد ملے گی۔ انہوں نے کہا کہ جرائم کی روک تھام پر قابو پانے میں سی سی کیمروں کی تنصیب معاون ثابت ہوگی۔ انہوں نے بتایا کہ شہر کے بعض علاقوں میں سی سی کیمروں کے ذریعہ مجرمین کو پکڑنے میں مدد ملی ہے اور کئی مقدمات کو باآسانی حل کرلیا گیا۔ کے ٹی آر نے کہا کہ آندھرائی حکمرانوں نے تلنگانہ تحریک کے دوران پروپگنڈہ کیا تھا کہ تلنگانہ ریاست کی تشکیل کی صورت میں نئی ریاست تاریکی میں ڈوب جائے گی اور برقی بحران پیدا ہوگا لیکن ٹی آر ایس حکومت نے کے چندر شیکھر راؤ کی قیادت میں برقی بحران پر نہ صرف قابو پایا بلکہ موسم گرما میں بھی کوئی کٹوتی نہیں کی گئی۔ انہوں نے کہا کہ برقی کی صورتحال پر قابو پانا ٹی آر ایس حکومت کا اہم کارنامہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ حیدرآباد کو عالمی معیار کا شہر بنانے کے منصوبہ کے ساتھ حکومت کام کررہی ہے۔ میٹرو ریل پراجکٹ کو شہر کے مضافاتی علاقوں تک توسیع دی جائے گی اور اس پراجکٹ سے شہر کے تمام علاقوں کا احاطہ کیا جائے گا تاکہ عوام کو دوردراز مقامات پہنچنے میں سہولت ہوسکے۔ کے ٹی آر نے کہا کہ میٹرو ریل پراجکٹ کو مقررہ وقت پر مکمل کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ شہر کے کئی علاقوں میں پانی کی قلت کو دور کرنے کیلئے گوداوری سے پانی کی سربراہی کا پراجکٹ شروع کیا گیا اور بہت جلد حیدرآباد پانی کے بحران سے نجات حاصل کرلے گا۔ انہوں نے کہا کہ آندھرائی حکمرانوں نے حیدرآباد اورتلنگانہ کی ترقی کو نظرانداز کردیا تھا۔ کے ٹی آر کے مطابق شہر کو پانی سربراہ کرنے کیلئے مزید 30ٹی ایم سی گنجائش کے دو ذخائیر آب کی تعمیر کا فیصلہ کیا گیا ہے اور ان کی تعمیر کے بعد حیدرآباد میں پانی کے مسئلہ کی مستقل یکسوئی کرلی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ عوام کو بنیادی سہولتوں کی فراہمی اور فلاحی اسکیمات میں مکمل حصہ داری کے اقدامات کئے جارہے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ حیدرآباد میں گوگل کا کیمپس قائم کیا جارہا ہے جس سے نوجوانوں کو ترقی میں مدد ملے گی۔ حیدرآباد میں 30 ماڈل مارکٹ یارڈس تعمیر کئے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ غریبوں کی بھلائی کیلئے ڈبل بیڈ رومس مکانات کی تعمیر کی اسکیم کا آغاز کیا گیا ہے اور اندرون ایک سال حیدرآباد میں ایک لاکھ مکانات کی تعمیر کا منصوبہ ہے۔

TOPPOPULARRECENT