Wednesday , September 20 2017
Home / سیاسیات / امیت شاہ کی میزبانی کرنے والا جوڑا ترنمول کانگریس میں شامل

امیت شاہ کی میزبانی کرنے والا جوڑا ترنمول کانگریس میں شامل

کلکتہ۔3۔مئی (سیاست ڈاٹ کام)ایک ہفتہ قبل نکسل باڑی میں بی جے پی کے قومی صدر امیت شاہ اور دیگر لیڈران کی میزبانی کرنے والے گیتا اور راجو مہالی نے بی جے پی کو داغ مفارقت دیتے ہوئے ممتا بنرجی کی قیادت والی ترنمول کانگریس میں شمولیت اختیار کرلی۔بنگال میں اپنے حق زمین ہموار میں مشغول بی جے پی کیلئے یہ واقعہ باعث شرمندگی ہے ۔گیتا اور راجو مہالی نے ریاستی وزیر سیاحت گوتم دیب کی موجودگی میں ترنمول کانگریس میں شمولیت احتیارکی ۔تاہم اس واقعہ سے شرمندگی کا سامنا کررہی بی جے پی نے دعویٰ کیا ہے کہ بی جے پی ورکروں کا اغوا کرکے جبراً ترنمول کانگریس میں شامل کیا گیا ہے ۔گوتم دیب نے کہا کہ ہم ان دونوں کا پارٹی میں خیرمقدم کرتے ہیں ۔گزشتہ ہفتے بی جے پی کے قومی صدر امیت شاہ نے گیتا کے گھر پر کھاناکھایا تھا اور ان کا مقصد قبائلیوں کے ووٹ بینک میں بی جے پی کی دعویداری کو مضبوط کرنا تھا۔ امیت شاہ نے دوپہر کا کھاناکھانے کے بعد مہالی زبان میں بات بھی کی تھی۔کیلے کے پتے پر پوتول بھانجا ، کری اور سلاد پیش کیا گیا تھا ۔یہ لوگ کل سے ہی اپنے گھر میں نہیں تھے ۔بی جے پی نے کے مقامی لیڈر نے ان دونوں کی گمشدگی کی رپورٹ بھی نکسل باڑی تھانے میں درج کرائی تھی ۔بی جے پی لیڈر دلیپ بروئی نے کہا کہ 25اپریل کو امیت شاہ کی میزبانی کرنے کے بعد سے ہی ترنمول کانگریس کے قائدین ان پر دباؤ بنارہے تھے ۔نکسل باڑی پولیس اسٹیشن کے آفیسر انچارج نے کہا کہ بی جے پی لیڈروں نے کل رات گیتا کی گمشدگی کی رپورٹ درج کرائی تھی ہم اس معاملے کی جانچ کررہے ہیں ۔ترنمول کانگریس نے بی جے پی لیڈروں کے الزامات بکواس قرار دیتے ہوئے کہا کہ کوئی بھی مہالیس پر دباؤ نہیں ڈالرہا تھا ۔سب سے حیرت انگیز بات یہ ہے کہ بی جے پی لیڈروں نے بھی خود ہی اعتراف کیا کہ یہ دونوں ترنمول کانگریس میں شمولیت کیلئے منصوبہ بنارہے تھے ۔ترنمول کانگریس کے لیڈر گوتم دیب نے کہاکہ دونوں میاں بیوی نے بغیر کسی دباؤ کے ترنمول کانگریس میں شمولیت اختیار کی ہے ۔یہ لوگ چیف منسٹر ممتا بنرجی کے ترقیاتی ایجنڈے سے متاثر ہیں ۔انہوں نے کہا کہ میں وہاں ایک ریلی میں ان کے ساتھ تھا۔میں گیتا اور راجو سے بات کروں گا وہ کس طرح کا کام چاہتے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ سیاست میں کبھی بھی زبردستی نہیں ہوتی ہے ۔وزیر اعلیٰ نے سماج کے پسماندہ طبقات بالخصوص آدی واسیوں کیلئے ایک بورڈ بنایا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT