Tuesday , August 22 2017
Home / مذہبی صفحہ / امیرالمومنین سیدنا علی کرم اﷲ وجہہ کے فیصلے

امیرالمومنین سیدنا علی کرم اﷲ وجہہ کے فیصلے

ابوعبداﷲ

رسول اکرم صلی اﷲ علیہ و آلہٖ و سلم نے اپنے اصحاب سے مخاطب ہوکر فرمایا تھا کہ تم سب میں اچھے قاضی و فقیہہ حضرت علی مرتضی ہیں۔آپ نے رسول مکرم صلی اﷲ علیہ و سلم سے اکتساب علم کیا تھا ۔ خلیفہ دوم حضرت عمر رضی اﷲ عنہ پیچیدہ مقدمات میں حضرت علی کرم اﷲ وجہہ کے مشورہ کی روشنی میں فیصلہ صادر کیا کرتے تھے ۔ایک شخص نے مولائے کائنات سے پوچھا یا علیؓ ایک اچھے قاضی یا جج کی صفات بتلائیں۔ حضرت علی ؓنے اچھے قاضی کی توجیہ اسطرح فرمائی ۔ کمال عقل ، صحیح تمیز ، زیرک ، سہو و غفلت سے عاری ، ذہانت ایسی کہ مشکل سے مشکل امور فوراً حل کردے ۔ اعلیٰ اخلاق ، ذلیل اور پست خیالات سے گریز ، راست گو ، امانتدار ، خوشی و ناراضگی میں دائرہ حق سے باہر نہ ہو ۔ کتاب و سنت و فقہ پر حاوی ہو ۔ انسانی فطرت سے پورا واقف ہو ، غصہ کی حالت میں فیصلہ نہ کرے ۔ ان ہی اوصاف کو لئے ہوئے حضرت علی مرتضی کرم اﷲ وجہہ کے چند فیصلوں کا ذکر یہاں پیش ہے۔
۱۔  ایک شخص نے اپنے غلام کو اپنے لڑکے کے ساتھ بھیجا ۔ اتفاقاً وہ دونوں راستہ میں لڑپڑے ۔ لڑکے نے غلام کو مارا ۔ غلام نے لڑکے کو گالیاں دیں اور یہ دعویٰ کیا کہ وہ لڑکا اس کا غلام ہے ۔ جب یہ قضیہ امیرالمؤمنین حضرت علی ابن ابی طالب کے پاس پہنچا تو حضرت علیؓ نے اپنے خدمت گار خاص قنبر سے فرمایا ۔ اے قنبر دیوار میں دو سوراخ بناؤ اور ان دونوں سے کہو کہ اپنے اپنے سر سوراخوں سے باہر نکالیں ۔ پھر فرمایا : اے قنبر رسول اﷲ ﷺ کی تلوار اٹھا لاؤ ۔ قنبر تلوار لائے تو کہا جلدی سے غلام کا سر کاٹ لے ۔ جو غلام تھا اس نے یہ سنکر خوف سے اپنا سر دیوار کے سوراخ سے باہر کھینچ لیا۔ لڑکا اسی طرح رہا ۔ پس حضرت نے غلام کو سزا دی اور آقا کی طرف لوٹادیا۔
۲۔  ایک شخص نے مرتے دم اپنے دوست کو دس ہزار درہم سونپے اور وصیت کی کہ جب تمہاری ملاقات میرے لڑکے سے ہو تو اس میں سے جو تم چاہو اس کو دے دینا ۔ درہم کی ادائی پر اس شخص اور لڑکے میں تنازعہ ہوا ۔ مقدمہ حضرت امیراالمؤمنین علی کرم اﷲ وجہہ کے پاس آیا۔ حضرت علیؓ نے اس شخص سے پوچھا تم لڑکے کو کتنی رقم دو گے ۔ اس شخص نے کہا ہزار درہم دونگا ۔ حضرت علی نے فرمایا پس اب نو ہزار درہم لڑکے کو دو اور ایک ہزار درہم خود رکھ لو کیونکہ جو تم نے چاہا وہ نو ہزار درہم ہیں۔ یہ علم نفسیات کا عظیم فیصلہ تھا۔                           … جاری ہے

TOPPOPULARRECENT