Wednesday , August 16 2017
Home / دنیا / انسداد دہشت گردی محاذ کے قیام کی تائید

انسداد دہشت گردی محاذ کے قیام کی تائید

ہند ۔روس ۔ چین وزرائے خارجہ کا اجلاس ،دوہرے معیار کیخلاف انتباہ
ماسکو ۔18اپریل ( سیاست ڈاٹ کام ) روس ، ہندوستان اور چین پر مشتمل سہ فریقی گروپ میں دہشت گردی سے نمٹنے کے سلسلے میں باہمی تعاون مزید مؤثر بنانے کے ساتھ ساتھ وسیع تر انسداد دہشت گردی محاذ کے قیام کی تجویز پیش کی جس میں اقوام متحدہ کا مرکزی کردار ہو ۔ اس بلاک نے فیصلہ کیا ہے کہ دہشت گردی نٹورکس کو مالیہ کے راستے بند کئے جائیں اور تین رکن ممالک باہمی تجارت اور سرمایہ کاری میں اضافہ کیلئے اقدام کریں۔ تینوں ممالک کے وزرائے خارجہ کے اجلاس میں بڑے پیمانہ پر تباہی پھیلانے والے ہتھیاروں کے دہشت گرد گروپس کے ہارتھوں میں چلے جانے کے خطرات پر تشویش ظاہر کی گئی ۔ انھوں نے اس چیلنج سے موثر طورپر نمٹنے کی ضرورت پر زور دیا ۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اُمور خارجہ سشما سوراج نے بین الاقوامی برادری کو انتباہ دیا کہ اگر وہ اس لعنت کے مقابلہ میں دوہرے معیار اختیار کرنا جاری رکھے تو اس کے سنگین نتائج برآمد ہوں گے ۔ سشما سوراج نے کہا کہ یوروپی یونین کو دہشت گردی کے مقابلہ میں دنیا کی قیادت کرنی چاہیئے ۔ سشما سوراج کا یہ تبصرہ وزیر خارجہ چین وانگ ای سے اس مسئلہ پر تبادلہ خیال کے بعد منظر عام پر آیا ۔ سہ فریقی بات چیت میں چین کی جانب سے ہندوستان کی جیش محمد کے سربراہ اور پٹھان کوٹ دہشت گرد حملہ کے کلیدی سازشی مسعود اظہر کو دہشت گرد قرار دینے کی اقوام متحدہ کی قرارداد کو مسترد کردینے کی چین کی کارروائی بھی موضوع تھی ۔ سوراج نے کہا کہ ہندوستان کو یقین ہے کہ سب سے اہم چیلنج جو بین الاقوامی صیانت کو درپیش ہے اب بھی بین الاقوامی دہشت گردی ہے ۔ آر آئی سی ممالک کو بین الاقوامی برادری کی رہنمائی کرنی چاہیئے کہ دہشت گردی کا مقابلہ مشترکہ کارروائی کے ذریعہ کیا جاسکتا ہے جس میں اقوام متحدہ بھی شامل رہے گی ۔ انہوں نے کہا کہ اس سلسلہ میں ہمیں ناکام نہیں ہونا چاہیئے ۔ اگر ہم دوہرے معیار دہشت گردی سے نمٹنے کے سلسلہ میں اختیار کرتے رہیں تو اس کے سنگین نتائج نہ صرف ہمارے اپنے ممالک کیلئے بلکہ بحیثیت مجموعی بین الاقوامی برادری کیلئے برآمد ہوں گے ۔ ان کا یہ تبصرہ چین کی جانب سے تحدیدات کمیٹی کی مسعود اظہر کو دہشت گرد قرار دینے کی قرارداد کو مسترد کرنے کے پس منظر میں اہمیت رکھتا ہے ۔
متاثرہ روسی لڑکی کی ماں سے سشما کی ملاقات
سشما سوراج نے آج 23 سالہ روسی خاتون کی ماں سے ملاقات کی جس پر گزشتہ سال نومبر میں وارناسی میں تیزاب سے حملہ کیا گیا تھا ۔ انھوں نے مجرم کو سخت سزاء کی یقینی دہانی کرائی ۔ سشما سوراج نے متاثرہ لڑکی کی ماں انتونینا پروکینا کو بتایا کہ اس معاملے میں مقدمہ چلایا جارہا ہے اور وہ چیف منسٹر اُترپردیش اکھلیش یادو سے ربط قائم کئے ہوئے ہے۔ 23 سالہ روسی لڑکی پر 13 نومبر کو مقامی نوجوان نے تیزاب سے حملہ کیا جس کے نتیجہ میں وہ 46 فیصد جھلس گئی تھی ۔ عدالت نے ملزم کی درخواست ضمانت مسترد کردی تھی ۔

TOPPOPULARRECENT