Sunday , August 20 2017
Home / Top Stories / انصاف رسانی کیلئے تمام طبقات سے مشترکہ جدوجہد پر زور

انصاف رسانی کیلئے تمام طبقات سے مشترکہ جدوجہد پر زور

تلنگانہ ڈیموکریٹک اینڈ سیکولر الائنس کی گول میز کانفرنس ، جناب ظہیرالدین علی خان و دیگر کا خطاب
حیدرآباد۔14فبروری(سیاست نیوز)انصاف کی جدوجہد کو پسماندگی کاشکار تمام طبقات کی متحدہ کوششوں کے ذریعہ کامیاب بنایا جاسکتا ہے کیونکہ جہاں ایس سی ایس ٹی او رمسلمانوں کے ساتھ برسوں سے زیادتیوں کا سلسلہ جاری ہے وہیںپر بی سی طبقہ بھی ہمیشہ استحصال کا شکار ہوتا آرہا ہے ۔ جناب ظہیر الدین علی خان تلنگانہ ڈیموکرٹیک اینڈسیکولر الائنس کے زیر اہتمام مدینہ ایجوکیشن سنٹر میںمنعقدہ گول میز کانفرنس سے خطاب کے دوران ان خیالات کا اظہار کررہے تھے۔ حیدرآباد سنٹر ل یونیورسٹی کے پی ایچ ڈی طالب علم روہت ویمولہ کی ناگہانی حالات میںخودکشی کے بعد حیدرآباد سنٹرل یونیورسٹی ‘ ایفلو‘ جی این یو ‘ آئی آئی ٹی مدراس اور ملک بھر کی قومی یونیورسٹیز میںجاری طلبہ کے احتجاج کی حمایت او راظہار یگانگت کے لئے منعقدہ اس گول میز کانفرنس کی نگرانی ڈاکٹر کولیورو چرنجیوی نے کی جبکہ مولانا محمد اظہر الدین  ‘ جماعت اسلامی‘ صدر جمعیت العلماء تلنگانہ وآندھرا مولانا مفتی غیاث الدین ‘ جنرل سکریٹری مفتی محمد زبیر ‘ نائب صدر تعمیرملت جناب ضیاء الدین نیر‘ جناب خلیق الرحمن ‘جناب نعیم اللہ شریف‘ جناب حیات حسین حبیب‘ مسٹر رام داس‘ نرسمہا ریڈی‘ ٹی ناگیشور رائو‘ محترمہ صغرا بیگم‘ دیور کنڈہ نا گ راج‘ انعام الرحمن خان غوری‘ محمدافضل عام آدمی پارٹی‘ ایم اے علی کے علاوہ مختلف تنظیموں‘جماعتیں کے سربراہان اور قائدین نے بھی اس گول میز کانفرنس میںشرکت کرتے ہوئے تلنگانہ ڈیموکرٹیک اینڈسیکولر الائنس کی جانب سے شروع کی گئی تحریک کی مکمل تائیدوحمایت کا اعلان کیا۔ اپنے سلسلے خطاب کو جاری رکھتے ہوئے جناب ظہیر الدین علی خان نے کہاکہ یونیورسٹیز میںایس سی ‘ ایس ٹی‘ بی سی اور مسلم طلبہ کے ساتھ ہونے والی زیادتیو ں کو ختم کرنے کے مذکورہ تمام طبقات کو ایک پلیٹ فارم کے ذریعہ متحدہ جدوجہد کے آغاز کی ضرورت ہے ۔ انہوںنے کہاکہ تلنگانہ میںتیرہ یونیورسٹیز ہیں جہاں پر بڑے پیمانے میں ان طبقات کے طلبہ زیر تعلیم ہیں مگر کسی نہ کسی وجہہ یہ طلبہ مسلسل استحصال کا شکا ر ہورہے ہیں۔انہوں نے ریاست تلنگانہ کی ان تیرہ یونیورسٹیز کے ایس سی ‘ ایس ٹی ‘ بی سی ‘ مسلم طلبہ میںاتحاد پیدا کرنے اور انہیںایک بیانر تلے لانے کی مہم شروع کرنے پر زوردیا۔ انہوںنے مزیدکہاکہ جب یہ تیرہ یونیورسٹی کے طلبہ ایک پلیٹ فارم کے تحت آجائیں گے تو ملک کی تمام یونیورسٹیز کے طلبہ کو ان کے ساتھ جوڑنا کوئی بڑی بات نہیںہوگی۔ جناب ظہیر الدین علی خان نے مزیدکہاکہ روہت ویمولہ کی خودکشی جیسے واقعات کی روک تھام تلنگانہ ڈیموکرٹیک اینڈسیکولر الائنس کی جانب سے شروع کی گئی اس تحریک کا وہ مکمل ساتھ دیں گے ۔ ڈاکٹرکولیورچرنجیوی نے اپنے صدراتی خطاب میں روہت ویمولہ مسئلہ پر نمائندگی کے لئے ایک سیول باڈی تشکیل دینے کا اس موقع پر اعلان کیا جس کے ذریعہ ہندوستان بھر میںروہت ویمولہ کی خودکشی کے اسباب کے متعلق عوام میںشعور بیداری مہم چلائی جائے گی ۔انہوں نے دہلی کے جنتر منتر پر دھرنے سے لیکر ہندوستان بھر کی مختلف یونیورسٹیز میںاحتجاج کررہے طلبہ سے ملاقات اوراظہا ر یگانگت کے لئے پروگرام چاک اوٹ کرنے کابھی اعلان کیاہے۔

TOPPOPULARRECENT