Wednesday , September 27 2017
Home / جرائم و حادثات / انٹر طالبہ کا قتل بچپن کے ساتھی نے کیا

انٹر طالبہ کا قتل بچپن کے ساتھی نے کیا

کردار پر شبہ، نابالغ لڑکے اور لڑکی کی ناکام محبت
حیدرآباد /13 ستمبر ( سیاست نیوز ) سائبر آباد پولیس نے سنسنی خیز چاندنی جین قتل کیس کو حل کرلیا ہے اور اس کے عاشق کو گرفتار کرلیا ہے ۔ پولیس کمشنر سائبرآباد مسٹر سندیپ شنڈالیہ نے آج ایک پریس کانفرنس کے دوران انٹر طالبہ چاندنی جین کے قتل کی وجوہات بتائی اور کہاکہ قاتل لڑکی کے بچپن کا ساتھی سائی کرن ہے ۔ دونوں میں گذشتہ روز سے ہر بات پر جھگڑا ہو رہا تھا ۔ نابالغ عاشق لڑکی سے دوری اختیار کر رہا تھا اور یہ بات لڑکی کو پسند نہیں تھی ۔ چاندنی نے اپنے عاشق کو نظرانداز کرنے اور دوری اختیار کرنے پر اپنے آپ کو ختم کرنے کی دھمکی بھی دی تھی ۔ 9 ستمبر کو سائی کرن چاندنی سے ملاقات کیلئے آیا اور دونوں ملکر بذریعہ آٹو جس کے ذریعہ پولیس نے قاتل کا پتہ چلایا امین پور گئے وہاں بات چیت کے دوران دونوں الجھ پڑے اور اس دوران چاندنی نے اپنے قاتل عاشق کو طمانچہ رسید کردیا جس کے بعد برہمی کے عالم میں سائی کرن نے چاندنی پر حملہ کردیا اور اسے ہلاک کرنے کے بعد اور اس کے سیل فون کو ایک کنویں میں پھینک کر آسانی سے فرار اختیار کرلی ۔ پولیس کمشنر کے مطابق لڑکا لڑکی سے دور ہونا چاہتا تھا ۔ چونکہ اسے شبہ تھا کہ چاندنی اور دو لڑکوں سے قریب ہوچکی ہے اور ان کے ساتھ خوشگوار تعلقات ہیں ۔ اس بات سے وہ سخت ناراض تھا ۔ حالانکہ لڑکی کسی بھی صورت میں قاتل سے دور ہونا نہیں چاہتی تھی ۔ اپنی محبوبہ کے کردار پر شبہ کی وجہ نابالغ عاشق نے اس کا قتل کردیا ۔ اس پریس کانفرنس میں جوائنٹ کمشنر آف پولیس سائبرآباد مسٹر شاہنواز قاسم کے علاوہ دیگر موجود تھے۔

TOPPOPULARRECENT