Thursday , August 24 2017
Home / کھیل کی خبریں / انگلینڈ اور ویلز ناک آؤٹ مرحلے میں داخل، روس خارج

انگلینڈ اور ویلز ناک آؤٹ مرحلے میں داخل، روس خارج

پیرس ، 21 جون (سیاست ڈاٹ کام) فرانس میں جاری یورو 2016ء فٹبال مقابلوں میں انگلینڈ اور ویلز کی ٹیمیں ٹورنمنٹ کے دوسرے مرحلے میں پہنچ گئی ہیں۔ گزشتہ روز انگلینڈ اور سلواکیہ کے درمیان مقابلہ کسی گول کے بغیر ڈرا رہا جبکہ ایک دیگر میچ میں ویلز نے روس کو 3-0 سے ہرا دیا۔ ویلز کی فتح نے اسے گروپ بی میں پہلی پوزیشن دلوا دی جبکہ انگلینڈ کا میچ برابر رہنے سے اسے گروپ بی میں دوسری پوزیشن مل سکی۔ یورو مقابلوں کے ابتدائی مرحلے میں بنائے گئے چھ گروپس میں سے ہر گروپ کی ابتدائی دو ٹیمیں براہِ راست دوسرے مرحلے میں پہنچ جائیں گی۔ فرانس کے شہر ساں ایتیئن میں کھیلے گئے میچ میں انگلینڈ نے پہلے ہاف میں سلواکیہ کے گول پر پے درپے حملے کئے  لیکن سلواکیہ کے گول کیپر ماتوس کوزاچک نے تمام کوششیں ناکام بنا دیں۔ انگلینڈ نے تمام وقت میچ پر اپنی گرفت مضبوط رکھی اور سلواکیہ کے گول پر متعدد حملے کئے لیکن کامیابی نصیب نہ ہوسکی۔ دوسرے ہاف میں انگلینڈ کی گیند پر گرفت کا تناسب 65 فیصد رہا۔ میچ کے بعد انگلینڈ کے ڈیفنڈر گیری کیہل نے میڈیا سے بات چیت میں کہا کہ یہ رات ہمارے لئے مایوس کن رہی… ہم نے میچ کے شروع سے اختتام تک غلبہ برقرار رکھا لیکن ہم گول نہیں کرسکے۔ ہم مایوس ہیں کیونکہ جس قدر گیند پر گرفت ہمارے پاس رہی اس کے بعد ہمیں میچ جیت لینا چاہئے تھا۔ اس میچ کیلئے انگلینڈ کے کوچ روئے ہوجسن نے ٹیم میں چھ تبدیلیاں کئے تھے کیونکہ انھیں اگلے مرحلے کیلئے کوالیفائی کرنے کیلئے پوائنٹس درکار تھے۔ کپتان وین رونی کو بھی ابتداء میں ٹیم سے باہر رکھا گیا تھا۔

تاہم وہ میچ کے دوران میدان پر واپس آگئے تھے۔ میچ کے آغاز پر ٹیم میں جگہ نہ پانے والے دوسرے کھلاڑیوں میں آر اسٹرلنگ، ہیری کین، ڈیلے ایلی، کائل واکر اور ڈینی روز شامل تھے۔ اس کے برخلاف سلواکیہ نے اپنی اُس ٹیم میں کوئی تبدیلی نہیں کی جس نے روس کو 2-1 سے ہرایا تھا۔ دریں اثناء ویلز نے زبردست کھیل کا مظاہرہ کرتے ہوئے روس کو 3-0 سے شکست فاش دی۔ ویلز کی جانب سے آرون ریمزی نے گیرتھ بیل کے پاس پر دوسرا گول کیا، جب کہ گیرتھ  نے دوسرے ہاف میں خود تیسرا گول کر کے ٹورنمنٹ میں اپنے اسکور کو تین تک پہنچا دیا۔ ویلز کی اس یورو 2016ء میں اب تک کارکردگی اس اعتبار سے شاندار رہی ہے کہ یہ 1958ء کے بعد اُن کا پہلا بڑا ٹورنمنٹ ہے۔

TOPPOPULARRECENT