Tuesday , September 26 2017
Home / کھیل کی خبریں / انگلینڈ ٹور کیلئے ٹسٹ ٹیم کا اعلان، عامر کی مشروط شمولیت

انگلینڈ ٹور کیلئے ٹسٹ ٹیم کا اعلان، عامر کی مشروط شمولیت

لاہور ، 6 جون (سیاست ڈاٹ کام) چیف سلیکٹر انضمام الحق نے دورۂ انگلینڈ کیلئے 17 رکنی اسکواڈ کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ محمد عامر کی ٹیم میں شمولیت ویزے سے مشروط ہے۔ اس دورے پر مصباح الحق کو کپتان برقرار رکھا گیا جبکہ وکٹ کیپر کیلئے سرفراز احمد اور محمد رضوان کو منتخب کیا گیا ہے۔ یہاں پریس کانفرنس منعقد کرتے ہوئے انضمام الحق نے بتایا کہ دورے کیلئے پانچ فاسٹ بولرز اور دو اسپنرز کو منتخب کیا گیا ہے۔ فاسٹ بولرز میں سہیل خان، راحت علی، محمدعامر، عمران خان اور وہاب ریاض کو شامل کیا گیا ہے۔ تاہم محمد عامر کی شمولیت ویزے سے مشروط ہے۔ چیف سلیکٹر نے کہا کہ امید ہے عامر کو برطانیہ کا ویزا مل جائے گا۔ تاہم اگر کوئی مسئلہ ہوا تو انگلینڈ کے دورہ پر موجود اے ٹیم سے کھلاڑیوں کو شامل کیا جاسکتا ہے۔ پاکستانی ٹیم کو 18 جون کو دورے کیلئے روانہ ہونا ہے جبکہ پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) پرامید ہے کہ آئندہ ہفتے تک عامر کو ویزا جاری کردیا جائے گا۔ عامر رواں سال جنوری میں نیوزی لینڈ کا دورہ کرچکے ہیں جہاں انھوں نے دو ونڈے اور ٹی ٹوئنٹی سیریز میں پاکستان کی نمائندگی کی تھی۔ اُن کو 2010ء میں اسپاٹ فکسنگ کے اعتراف پر 6 ماہ کی قید ہوئی تھی اور انھیں برطانیہ کے کم عمر قیدیوں کے انسٹیٹیوٹ میں رکھا گیا تھا۔ اسپاٹ فکسنگ میں ملوث ہونے پر اس وقت کے کپتان سلمان بٹ اور فاسٹ بولر محمد آصف کو بھی برطانوی عدالت نے قید اور ان کے کرکٹ کھیلنے پر پابندی عائد کی تھی۔ عامرسمیت سلمان اور آصف کو گزشتہ سال آئی سی سی کی جانب سے کرکٹ میں واپسی کی اجازت دی گئی۔ تاہم جرم میں سزا یافتہ ہونے پر برطانوی حکومت عامر کو ویزا جاری کرنے سے انکار کرسکتی ہے۔ تین روز قبل دورۂ انگلینڈ کیلئے آئی سی سی کے چیف ایگزیکٹیو ڈیوڈ رچرڈسن ، محمد عامر کی حمایت کرچکے ہیں۔ کوچ مکی آرتھر سے متعلق سوال پر انضمام الحق نے کہا کہ وہ تاحال پاکستان نہیں پہنچ سکے۔ تاہم ٹیم کے انتخاب میں اُن کی رائے بھی لی گئی ہے۔ فاسٹ بولر جنید خان سے متعلق ایک سوال پر چیف سلیکٹر نے کہا کہ وہ مکمل ردھم میں نہیں ہیں۔ تاہم وہ اچھے کھلاڑی ہیں اور ان کی ٹیم میں شمولیت زیر غور ہے۔ چیف سلیکٹر نے مزید کہا کہ چار ٹسٹ میچز کیلئے دو وکٹ کیپر بھیج رہے ہیں تاکہ کسی ایک پر دباؤ نہ پڑے۔

TOPPOPULARRECENT