Sunday , October 22 2017
Home / شہر کی خبریں / انیس الغرباء کی ہمہ منزلہ عمارت کی تعمیر کا عدم آغاز

انیس الغرباء کی ہمہ منزلہ عمارت کی تعمیر کا عدم آغاز

چیف منسٹر کے ہاتھوں سنگ بنیاد کا ایک ماہ مکمل ، عمارت کی تعمیر کا پلان بھی منظور نہیں ہوا
حیدرآباد۔26 جولائی (سیاست نیوز) چیف منسٹر کے چندر شیکھر رائو نے 18 جون کو نامپلی میں انیس الغربا کے ہمہ منزلہ کامپلکس کا سنگ بنیاد رکھا تھا لیکن ایک ماہ سے زائد عرصہ گزرنے کے باوجود آج تک تعمیری کاموں کا آغاز نہیں ہوا۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ 22 کروڑ روپئے کی لاگت سے تعمیر کئے جانے والے اس ہمہ منزلہ کامپلکس کے لیے وقف بورڈ کی جانب سے ایک کروڑ روپئے محکمہ عمارات و شوارع (آر اینڈ بی) کے حوالے کئے گئے۔ بتایا جاتا ہے کہ تعمیر میں تاخیر کے لیے محکمہ اقلیتی بہبود ذمہ دار ہے کیوں کہ ابھی تک عمارت کے پلان کو منظوری نہیں دی گئی۔ پلان کی منظوری کے بغیر ہی چیف منسٹر کے ذریعہ سنگ بنیاد رکھنا باعث حیرت ہے۔ عام طور پر کوئی بھی محکمہ پلان کی تیاری کے بعد ہی سنگ بنیاد رکھتا ہے اور تعمیری کام کے لیے بھی کنٹراکٹر کے لیے مدت کا تعین کیا جاتا ہے۔ محکمہ اقلیتی بہبود نے عجلت میں سنگ بنیاد تو رکھ دیا لیکن ابھی تک ہمہ منزلہ کامپلکس کے منصوبے پر غور و خوض جاری ہے۔ کامپلکس کی تعمیر میں تاخیر کو دیکھتے ہوئے صدرنشین وقف بورڈ محمد سلیم نے حکومت کے مشیر اے کے خان اور سکریٹری اقلیتی بہبود سید عمر جلیل کے ہمراہ اجلاس منعقد کیا۔ اس اجلاس میں انیس الغربا کے منصوبے کو جلد قطعیت دینے اور آر اینڈ بی حکام کے ساتھ علیحدہ اجلاس طلب کرنے کا فیصلہ کیا گیا تاکہ مقررہ مدت کے دوران کامپلکس کی تعمیر کو مکمل کیا جاسکے۔ حکومت نے کامپلکس کی تعمیر کے لیے رقم وقف بورڈ سے جاری کرنے کا فیصلہ کیا ہے کیوں کہ انیس الغربا وقف بورڈ کے تحت ہے۔ صدرنشین وقف بورڈ محمد سلیم نے عصری سہولتوں کے ساتھ یتیم خانے کی تعمیر اور حقیقی معنوں میں یتیم و یسیر بچوں کو انیس الغربا میں شریک کرنے کے مقصد سے کامپلکس کی تجویز رکھی تھی تاکہ کمرشیل سرگرمیوں سے حاصل ہونے والی آمدنی سے انیس الغربا بہتر انداز میں چلایا جاسکے۔ بتایا جاتا ہے کہ 7 منزلہ عمارت کے ابتدائی دو فلور تجارتی سرگرمیوں کے لیے مختص کئے جائیں گے جو تجارتی اداروں کو الاٹ ہوں گے۔ باقی 5 منزلوں پر انیس الغربا یتیم خانہ رہے گا جس میں لڑکے اور لڑکیوں کے لیے علیحدہ حصہ رہے گا۔ محمد سلیم نے کہا کہ 600 بچوں کی گنجائش رہے گی اور عمارت میں بنیادی سہولتوں کی فراہمی کے علاوہ دینی تعلیم اور فنی تربیت کا بھی انتظام کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ قابل اور تجربہ کار اسٹاف کے تقرر کے ذریعہ ادارے کی بہتر کارکردگی کو یقینی بنایا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ لڑکیوں کے لیے لیڈیز اسٹاف رہے گا۔ انیس الغربا کی کارکردگی کی نگرانی کے لیے علیحدہ کمیٹی تشکیل دی جائے گی۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا ہے کہ بہت جلد کامپلکس کے منصوبے کو قطعیت دے دی جائے اور اسے آر اینڈ بی حکام کے حوالے کیا جائے۔ صدرنشین وقف بورڈ نے چیف منسٹر کی جانب سے سنگ بنیاد کے ایک ماہ بعد بھی تعمیری کام کے عدم آغاز پر ناراضگی کا اظہار کیا اور بتایا کہ اس سلسلہ میں چیف منسٹر کے دفتر سے بھی معلومات حاصل کی گئی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT