Monday , August 21 2017
Home / اضلاع کی خبریں / اوقافی اداروں کے تحفظ کیلئے حکومت کے مثالی اقدامات

اوقافی اداروں کے تحفظ کیلئے حکومت کے مثالی اقدامات

نظام آباد:20؍ فروری (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز)تلنگانہ راشٹرا سمیتی کے اقلیتی قائدین مسرزمحمد رفیع،محمدمنہاج، محمد بصیر، امجد خان،مسکین،محمد اکرم،عبدالرحیم،شیخ علی صابری، پرویز،امتیاز،ارشد، صلاح الدین نے ضلع نظام آباد میں اوقافی اداروں کی تعمیر و مرمت کے لئے ٹی آر ایس حکومت سے خطیر رقومات کی اجرائی پر صدر ضلع وقف کمیٹی مسٹر محمد جاوید اکرم کی تنقید پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ ہونا تو یہ چاہئے تھا کہ اوقافی اداروں کے لئے رقومات کی اجرائی پر مسرت کا اظہار کیا جائے لیکن اس کے برعکس کیا جارہا ہے ۔ ٹی آر ایس قائدین نے کہا کہ ایک عرصہ سے اوقافی اداروں کے لئے سرکاری امدا د مسدود ہوگئی تھی، لیکن چیف منسٹر مسٹر کے چندر شیکھر راؤ کی زیر قیادت ٹی آر ایس حکومت اقلیتوں خاص کر مسلمانوں کی ترقی و بہبود کے لئے فراخدلانہ اقدامات کررہی ہے ۔ اقلیتوں خاص کر مسلمانوں کے مسائل کی یکسوئی کے لئے ٹی آر ایس کے سینئر قائدین مسرز نوید اقبال، رحیم سیفی،یٰسین صابری، ایس اے علیم، طارق انصاری، حلیم قمر اور عمران شہزاد،مجاہد علی (ببو) کی کاوشیں قابل ستائش ہیں جنہوں نے ضلع میں ترقیاتی و بہبود کے کاموں میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیا ہے۔ انہی کی کاوشوں کا نتیجہ ہے کہ بالکنڈہ میں 1.27 کروڑ روپے اور نظام آباد شہر میں 66 لاکھ روپے اوقافی اداروں کی تعمیر و مرمت کے لئے ریاستی حکومت نے جاری کئے ہیں۔ ٹی آر ایس قائدین نے بتایاکہ اوقافی اداروں کی تعمیر و مرمت کے لئے رقومات کی اجرائی کی ذمہ داری حکومت نے چونکہ نظام آباد میونسپل کارپوریشن کو سونپی تھی اسی لئے کارپوریشن کے ذمہ داروں کے ہاتھوں چیکس کی تقسیم عمل میں آئی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ مساجد، درگاہوں، قبرستانوں اور عیدگاہوں کی نشاندہی بھی ٹی آر ایس کے مقامی قائدین نے ہی کی تھی، ٹی آر ایس قائدین خدمت اور کام میں یقین رکھتے ہیں وہ شہرت کے لئے کام نہیں کرتے ہیں ۔ ٹی آر ایس قائدین نے کہا کہ ضلع وقف کمیٹی تحفظ اوقاف اور ان کی ترقی کے لئے اپنا رول ادا کرنے میںنا کام رہی ہے۔ جہاں تک اوقافی اداروں کی ترقی اور صیانت اوقاف کا تعلق ہے ٹی آر ایس حکومت مثالی اقدامات کررہی ہے۔ ٹی آر ایس دور حکومت میں اوقافی جائیدادوں کی صیانت میں کوئی کسر نہیں چھوڑی جارہی ہے اس کے برخلاف کانگریس کے دور حکومت میں اوقاف کی جائیدادوں کو جتنا نقصان پہنچا ہے اس کی نظیر نہیں ملتی۔ حتیٰ کہ حکومت نے ہی کروڑ ہا روپے مالیت کی اوقافی جائیدادوں پر اپنا دعویٰ کرتے ہوئے انہیں فروخت کردیا ہے۔ ٹی آر ایس قائدین نے استفسار کیا کیا کہ مسٹر محمد جاوید کیا یہ بتاسکتے ہیں کہ کانگریس کے 10 سالہ دور حکومت میں کتنی رقومات جاری کی گئیں۔ اقلیتی بہبود کے لئے مختص بجٹ کا استعمال نہ کئے جانے کے باعث وہ واپس لوٹادی گئیں۔ انہوں نے بتایا کہ ٹی آر ایس حکومت کے دور میں نہ صرف اوقافی جائیدادوں کی ترقی کے اقدامات کئے جارہے ہیں بلکہ اقلیتوں خاص کر مسلمانوں کی فلاح و بہبود کے لئے بھی ٹھوس اقدامات کئے جارہے ہیں۔ جاری اسکیمات سے مستحقین کو زیادہ سے زیادہ فائدہ پہنچانے شرائط کو نرم کردیا گیا ہے اور مقررہ نشانوں کو بھی بڑھا دیا گیا ہے۔ انہوں نے بتایاکہ سرعت آمیزی کے ساتھ اقلیتوں میں قرضہ جات تقسیم کئے جارہے ہیں۔ تعلیم کے میدان میں بھی ٹھوس اقدامات کئے جارہے ہیں۔ ضلع میں آئندہ تعلیمی سال سے اقامتی اسکولس کا جال پھیلایا جارہا ہے، جس کے لئے خطیررقم بھی مختص کردی گئی ہے۔

TOPPOPULARRECENT