Sunday , August 20 2017
Home / شہر کی خبریں / اوقافی جائیدادوں پر ایوان کمیٹی کا اجلاس طویل عرصہ سے منعقد نہیں ہوا

اوقافی جائیدادوں پر ایوان کمیٹی کا اجلاس طویل عرصہ سے منعقد نہیں ہوا

کئی اہم اوقافی امور کی یکسوئی میں تاخیر ، ارکان کمیٹی بے چینی کا شکار
حیدرآباد۔ 21۔ ستمبر (سیاست نیوز) اوقافی جائیدادوں سے متعلق ایوان کی کمیٹی کا طویل عرصہ سے اجلاس منعقد نہیں ہوا جس کے باعث کئی اہم اوقافی امور کی یکسوئی میں تاخیر ہورہی ہے۔ اسمبلی اور کونسل کے ارکان پر مشتمل ایوان کی کمیٹی تشکیل دی گئی تھی لیکن ابھی تک کمیٹی کے صرف دو اجلاس ہوئے۔ دونوں اجلاسوں میں ارکان نے اوقافی جائیدادوں کے تحفظ کے سلسلہ میں عہدیداروں سے تفصیلات طلب کیں اور دوسرے وقف سروے کی پیشرفت کا جائزہ لیا تھا ۔ اس کے علاوہ اہم اوقافی جائیدادوں کی ترقی اور آمدنی میں اضافہ کیلئے کرایہ پر نظرثانی کی تجویز پیش کی گئی لیکن کمیٹی کا اجلاس ملتوی کئے جانے کے سبب ارکان میں بے چینی پائی جاتی ہے۔ کمیٹی کے ارکان کا احساس ہے کہ اوقافی جائیدادوں کے تحفظ اور ان کی ترقی کیلئے مقررہ مدت میں اجلاس منعقد کیا جانا چاہئے ۔ واضح رہے کہ 10 جنوری 2015 ء کو 12 ارکان پر مشتمل ایوان کی کمیٹی تشکیل دی گئی تھی ۔ 25 فروری کو کمیٹی کا تعارفی اجلاس منعقد ہوا تھا۔ 23 جولائی کو باقاعدہ پہلا اجلاس منعقد ہوا جبکہ دوسرا اجلاس 6 اگست کو منعقد ہوا تھا ۔ 20 اگست کو تیسرے اجلاس کی تاریخ مقرر کی گئی تھی لیکن لمحہ آخر میں اسے ملتوی کردیا گیا ہے۔ کمیٹی کو سفارشات پیش کرنے کیلئے ابتداء میں 3 ماہ کی مہلت دی گئی تاہم بتایا جاتا ہے کہ بعد میں نومبر تک میعاد میں توسیع کی گئی۔ دونوں اجلاسوں میں ارکان نے شہر کی کئی اہم اوقافی جائیدادوں کے مسائل اٹھائے تھے اور ان کے بارے میں عہدیداروں سے رپورٹ طلب کی تھی۔ شہر میں کئی اہم اوقافی اراضیات مجلس بلدیہ اور دیگر سرکاری اداروں کی تحویل میں ہیں جن کے معاوضہ کے طور پر کروڑہا روپئے وقف بورڈ کو حاصل ہونے ہیں۔ ایوان کی کمیٹی نے اس مسئلہ پر کمشنر گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن کو کمیٹی کے اجلاس میں طلب کیا تھا لیکن اجلاس منعقد نہ ہونے کے سبب یہ مسئلہ تعطل کا شکار ہوگیا ۔ کمیٹی کے ایک رکن محمد فاروق حسین نے صدرنشین کمیٹی باجی ریڈی گوردھن سے خواہش کی کہ جلد سے جلد ایوان کی کمیٹی کا اجلاس طلب کیا جائے تاکہ تلنگانہ میں اوقافی جائیدادوں کے تحفظ اور وقف بورڈ کی آمدنی میں اضافے کے اقدامات کئے جاسکیں۔

TOPPOPULARRECENT