Tuesday , June 27 2017
Home / شہر کی خبریں / اوقافی جائیدادوں کو لیز پر دینے گلوبل ٹنڈرس کی طلبی

اوقافی جائیدادوں کو لیز پر دینے گلوبل ٹنڈرس کی طلبی

متولی درگاہ حضرات یوسفینؒ کی میعاد میں توسیع کے احکامات کالعدم ، تلنگانہ وقف بورڈ اجلاس میں کئی اہم فیصلے
حیدرآباد۔ 10 اپریل (سیاست نیوز) تلنگانہ وقف بورڈ نے درگاہ حضرات یوسفینؒ کے متولی کی تولیت میں اضافہ سے متعلق وقف بورڈ کے یکم ڈسمبر 2016ء کو جاری کردہ احکامات کو کالعدم کردیا ہے۔ بورڈ نے درگاہ کے انتظامات اور خاص طور پر تمام ہُنڈیوں کو اپنی راست نگرانی میں لینے کا فیصلہ کیا۔ بورڈ نے 11 اہم اوقافی جائیدادوں کو 30 سالہ لیز پر دینے سے متعلق حکومت کی اجازت کے تحت گلوبل ٹنڈرس طلب کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ بورڈ نے عدالتوں میں زیردوران مقدمات کی عاجلانہ یکسوئی، بڑی درگاہوں کے انتظامات کے ہراج اور اوقافی جائیدادوں پر غیرقانونی ہورڈنگس کی برخاستگی کا فیصلہ کیا۔ حج ہاؤز میں صدرنشین محمد سلیم کی صدارت میں اجلاس منعقد ہوا۔ تقریباً 5 گھنٹوں تک جاری رہے اس اجلاس میں کئی اہم موضوعات کا احاطہ کیا گیا۔ ایجنڈہ میں باقاعدہ 32 اُمور شامل تھے جبکہ تقریباً 40 اُمور پر ارکان نے غور کرتے ہوئے فیصلہ کئے ہیں۔ اجلاس کے بعد میڈیا نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے صدرنشین محمد سلیم نے بتایا کہ درگاہ حضرات یوسفینؒ کے متولی سید شاہ حسن شبیر محمد محمدالحسینی کی میعاد میں 3 سالہ توسیع کرتے ہوئے بورڈ نے جو احکامات جاری کئے تھے، انہیں کالعدم کردیا گیا کیونکہ ازروئے وقف قانون عہدیداروں کو میعاد کی تکمیل سے 6 ماہ قبل توسیع کا اختیار نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ متولی کی میعاد جولائی میں ختم ہورہی ہے اور وہ اُس مدت تک برقرار رہیں گے، تاہم اس کے بعد بورڈ اسے اپنی راست نگرانی میں لے سکتا ہے۔ اس فیصلہ کو بورڈ کی تولیت کمیٹی سے رجوع کردیا گیا۔ صدرنشین بورڈ نے بتایا کہ عہدیداروں نے وقف قواعد کی خلاف ورزی کرتے ہوئے میعاد میں توسیع کے احکامات جاری کئے تھے۔ انہوں نے بتایا کہ درگاہ کے تحت موجود تمام ہنڈیوں کی نگرانی اب وقف بورڈ کرے گا اور وقف بورڈ ہی انہیں کھولنے کا مجاز ہوگا۔ انہوں نے شہر اور رنگاریڈی میں جن 11 اہم جائیدادوں کو 30 سالہ لیز پر دینے کیلئے حکومت نے منظوری دی ہے، اس معاملے کو بورڈ کی ڈیولپمنٹ کمیٹی سے رجوع کیا گیا ہے۔ ڈیولپمنٹ کمیٹی گلوبل ٹنڈرس کی طلبی کے طریقہ کار کو طئے کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ اوقافی جائیدادوں کو لیز پر دیتے ہوئے بورڈ کی آمدنی میں اضافہ کیا جاسکتا ہے اور یہ رقم مسلمانوں کی فلاح و بہبود پر خرچ کی جاسکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ 11 اراضیات میں بعض اراضیات کے معاملات عدالتوں میں زیردوران ہیں، لہذا گلوبل ٹنڈرس کی طلبی سے قبل عدالت سے کلیئرنس حاصل کیا جائے گا۔ صدرنشین وقف بورڈ نے بتایا کہ اوقافی جائیدادوں پر موجود تمام غیرقانونی ہورڈنگس کو فی الفور برخاست کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ حج ہاؤز کے احاطہ میں موجود ہورڈنگس کے سلسلے میں کمپنیوں سے نئے معاہدے کئے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ وقف بورڈ کی اراضی پر ہورڈنگس عریاں اور قابل اعتراض تصاویر سے پاک ہونے چاہئیں۔ انہوں نے کہا کہ درگاہ حضرت سعداللہ حسینیؒ بڑا پہاڑ کے انتظامات کا آکشن کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ درگاہ حضرت جہانگیر پیراںؒ کے انتظامات کا بھی ہراج کیا جائے گا۔ درگاہ حضرت جان پاک شہیدؒ کے انتظامات کا معاملہ چونکہ عدالت میں زیردوران ہے، لہذا ہفتہ واری اساس پر انتظامات کی ذمہ داری دی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ حج ہاؤز کی عمارت کی آہک پاشی اور کلرنگ کے سلسلے میں ٹنڈر طلب کئے جائیں گے۔ انہوں نے بتایا کہ شہر میں اہم اوقافی جائیدادوں پر غیرمجاز قبضوں اور تعمیرات کا وہ ٹاسک فورس کے ساتھ بذات ِ خود دورہ کریں گے۔ آئندہ ہفتہ سے مختلف جائیدادوں کو دورہ شروع ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ مسجد نانا باغ، بشیر باغ اور ہائی ٹیک سٹی میں غیرمجاز تعمیرات کے خلاف ڈائریکٹر جنرل آف پولیس اور کمشنر پولیس سے نمائندگی کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ غیرمجاز تعمیرات کے خلاف دوبارہ ایف آئی آر درج کیا جائے گا اور گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن کے ذریعہ انہدامی کارروائی کی جائے گی۔ صدرنشین محمد سلیم نے بتایا کہ حکومت نے گرانٹ اِن ایڈ کے تحت 32 کروڑ روپئے کے منجملہ 20 کروڑ روپئے جاری کئے ہیں، باقی 12 کروڑ روپئے کیلئے چیف منسٹر سے نمائندگی کی جائے گی۔ انہوں نے بتایا کہ عیدگاہ گٹلہ بیگم پیٹ کے تحت مسجد کے انتظامات کو بورڈ نے اپنی راست نگرانی میں لینے کا فیصلہ کیا ہے اور اس معاملے کو تولیت کمیٹی سے رجوع کیا گیا تاکہ نئی کمیٹی کی تشکیل کے اقدامات کئے جائیں۔ انہوں نے مسجد کو حاصل ہونے والی رقومات میں بے قاعدگیوں کی شکایات ملیں، جس کے باعث یہ فیصلہ کیا گیا۔ انہوں نے بتایا کہ اوقافی جائیدادوں کے تحفظ کیلئے دو ٹاسک فورس ٹیمیں تشکیل دی جارہی ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ انارم شریف (ورنگل) کی درگاہ کے ٹنڈر کو بورڈ نے منظوری دے دی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اوقافی جائیدادوں کے کرایہ میں اضافہ کیلئے اقدامات کئے جائیں گے اور ہر جائیداد کے کرایہ میں اضافہ کیا جائے گا۔ اجلاس میں جن ارکان نے شرکت کی، ان میں مولانا سید اکبر نظام الدین حسینی صابری، ملک معتصم خان، مرزا انور بیگ، صوفیہ بیگم، نثار حسین حیدر آغا، وحید احمد ایڈوکیٹ، معظم خان، زیڈ ایچ جاوید شامل ہیں۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT