Thursday , September 21 2017
Home / شہر کی خبریں / اوقافی جائیدادوں کے متعلق بیان بازی ، عمل ندارد

اوقافی جائیدادوں کے متعلق بیان بازی ، عمل ندارد

تلنگانہ وقف کمشنریٹ کا قیام ضروری ، گول میز کانفرنس سے عزیز پاشاہ کا خطاب
حیدرآباد۔8ستمبر(سیاست نیوز)حکومت تلنگانہ کو اوقافی جائیدادوں کی صیانت کے متعلق تمام محاذوں پر ناکام قراردیتے ہوئے سابق رکن پارلیمنٹ راجیہ سبھا وسینئر کمیونسٹ قائد جناب سیدعزیز پاشاہ نے کہاکہ انتخابات سے قبل حکمران جماعت نے اقتدار میں آنے کے ساتھ ہی تلنگانہ ریاست میںمسلمانوں کو بارہ فیصد تحفظات اور اوقافی جائیدادوں کی صیانت کو یقینی بنانے کا وعدہ کیا تھا جو پندرہ ماہ کے طویل انتظار کے بعد بھی حکمران جماعت کا یہ وعدہ پورا نہیں ہوسکا۔ آج یہاں آل انڈیا میناریٹی مسلم ریزرویشن کی جانب سے اوقافی اراضیات کی صیانت میں منعقدہ گول میز کانفرنس سے صدراتی خطاب کے دوران جناب سید عزیز پاشاہ نے تلنگانہ کی اوقافی جائیدادوں کی بازیابی اور حفاظت کے متعلق متحدہ ریاست آندھرا پردیش کے حکمرانوں کے طرز پر کام کرنے کاریاستی حکومت پر الزام عائد کیا۔جناب سیدعزیز پاشاہ نے کہا کہ ریاست کے اوقافی جائیدادوں کی بازیابی اور صیانت کے متعلق تلنگانہ حکومت کے ذمہ داران کی بیان بازیاں تو جاری ہیں مگر عملی اقدمات ندارد ہیں۔ انہوں نے حالیہ عرصہ میںریاستی وزیر ٹی ہریش رائو کی جانب سے تلنگانہ کی وقف جائیدادوں بالخصوص منی کنڈہ جاگیر کی وقف اراضی کو حاصل کرنے کے دعوے کی ستائش کرتے ہوئے کہاکہ اگر حکومت تلنگانہ منی کنڈہ جاگیر کی وقف اراضی حاصل کرتے ہوئے تلنگانہ وقف بورڈ کے حوالے کرتے ہیں تو حکومت تلنگانہ کا یہ تاریخ ساز کارنامہ ہوگا۔ جناب سیدعزیز پاشاہ نے کہاکہ وقف اراضیات کی صیانت او ربازیابی میں حکومت تلنگانہ اگر سنجیدہ ہے تو سب سے پہلے حکومت تلنگانہ وقف بورڈ کو کمشنریٹ میں تبدیل کرے۔ انہوں نے کہاکہ تلنگانہ وقف کمشنریٹ کا قیام وقف جائیدادوں کی صیانت میں سب سے موثر اقدام ثابت ہوگا۔ مشیر کل ہند میناریٹی مسلم آرگنائزیشن جناب ایم اے صدیقی نے گول میز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وقف جائیدادوں کی صیانت میں منظم تحریک چلانے کی ضرورت پر بھی زوردیا۔ کانفرنس کی نگرانی جناب مختار حسین صدر کل ہند میناریٹی مسلم آرگنائزیشن نے کی جبکہ نائب صدر آرگنائزیشن محترمہ شیراز امینہ خان‘ محترمہ مسرت سلطانہ ‘ تنظیم آواز گریٹرحیدرآباد کے نائب صدر ایم اے ستار ‘ محمد علی‘ جناب اُردو انصاری نے بھی اس گول میز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے تلنگانہ میں وقف جائیدادوں کی بازیابی اور حفاظت کو معاشی اور تعلیمی پسماندگی کا شکار مسلمانوں کے لیے راحت کا ذریعہ قراردیا۔

TOPPOPULARRECENT