Saturday , September 23 2017
Home / شہر کی خبریں / اوورسیز اسکالرشپ 15 نومبر تک پہلی قسط اجرائی کا اعلان

اوورسیز اسکالرشپ 15 نومبر تک پہلی قسط اجرائی کا اعلان

منتخبہ امیدوار پریشان نہ ہو ، سکریٹری اقلیتی بہبود عمر جلیل کی پریس کانفرنس
حیدرآباد۔/23اکٹوبر، ( سیاست نیوز) بیرون ملک یونیورسٹیز میں اعلیٰ تعلیم کیلئے حکومت کی اوورسیز اسکالر شپ اسکیم کے منتخب امیدواروں کیلئے خوشخبری ہے کہ محکمہ اقلیتی بہبود نے تمام شرائط کی تکمیل کرنے والے امیدواروں کو 15نومبر تک اسکالر شپ کی پہلی قسط جاری کرنے کا اعلان کیا ہے۔ اس اسکیم پر عمل آوری میں تاخیر کے بارے میں روز نامہ ’سیاست‘ میں رپورٹ کی اشاعت کے بعد سکریٹری اقلیتی بہبود سید عمر جلیل نے ڈائرکٹر اقلیتی بہبود ایم جے اکبر اور دیگر عہدیداروں سے اسکیم کی پیشرفت کا جائزہ لیا۔ بعد میں میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے سید عمر جلیل نے کہا کہ اگرچہ منتخب امیدواروں کو اسکالر شپ کی پہلی قسط جاری نہیں کی گئی لیکن انہیں فکر مند ہونے کی ضرورت نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ جو بھی طالب علم یونیورسٹی میں داخلہ حاصل کرنے کے بعد ضروری دستاویزات داخل کریں گے انہیں 15نومبر تک اسکالر شپ کی پہلی قسط ان کے بینک اکاؤنٹ میں جمع کردی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ اسکیم کے منتخب امیدواروں کو تشویش میں مبتلا ہونے کی ضرورت نہیں ہے۔ جن 210امیدواروں کا انتخاب کیا گیا انہیں چاہیئے کہ وہ ایڈمیشن کارڈ، روانگی سے متعلق ایر لائنس کا بورڈنگ کارڈ اور داخل کردہ دستاویزات کے درست ہونے سے متعلق ڈیکلریشن آن لائن کرنا ہوگا جس کے بعد پہلی قسط کی رقم بینک اکاؤنٹ میں جمع کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ جو طلباء بیرون ملک روانہ ہوچکے ہیں اور ان کا منتخب طلباء کی فہرست میں نام موجود ہے انہیں مذکورہ تفصیلات محکمہ اقلیتی بہبود کو آن لائن روانہ کرنی چاہیئے۔ انہوں نے وضاحت کی کہ مناسب تعداد میں طلباء کی جانب سے مذکورہ تفصیلات کی روانگی کے بعد پہلی قسط کی اجرائی عمل میں آئے گی۔ ایک یا چند طلباء کی صورت میں محکمہ اقلیتی بہبود کو رقم کی منتقلی میں دشواری ہوگی لہذا کم از کم 100طلباء دستاویزات داخل کریں تو تمام کو بیک وقت پہلی قسط جاری کردی جائے گی۔ جب ان سے پوچھا گیا کہ کیا ایک بھی منتخب طالب علم نے تفصیلات روانہ نہیں کی ہے تو انہوں نے محکمہ کے متعلقہ عہدیداروں سے تفصیلات حاصل کرنے کا تیقن دیا۔ اقلیتی بہبود کے عہدیدار یہ تفصیلات بتانے سے قاصر رہے۔ انہوں نے اعتراف کیا کہ قرض حاصل کرتے ہوئے بیرون ملک روانہ ہونے والے طلباء کو اسکالر شپ کی اجرائی میں تاخیر سے ان پر بوجھ میں اضافہ ہوسکتا ہے۔ سید عمر جلیل نے عہدیداروں کو ہدایت دی کہ وہ تمام تفصیلات ان کے پاس پیش کریں۔ پریس کانفرنس کے دوران جب اقلیتی بہبود کے بجٹ کی اجرائی اور قرض کے علاوہ ’ شادی مبارک ‘ کی ضلع واری تفصیلات کے بارے میں پوچھا گیا تو متعلقہ عہدیداروں نے تعطیلات کا بہانہ بناکر بعد میں تفصیلات جاری کرنے کی بات کہی۔ایک سوال کے جواب میں سکریٹری اقلیتی بہبود نے بتایا کہ مختلف اداروں کے عہدیداروں کی جانب سے پالیسی بیانات کی اجرائی پر روک لگانے کیلئے ہدایات دی گئی ہیں کیونکہ کسی بھی اسکیم پر عمل آوری کا سہرا حکومت کے سر جاتا ہے اور عہدیدار صرف عمل آوری کے پابند ہوتے ہیں۔ واضح رہے کہ حکومت نے ابھی تک اسکالر شپ کیلئے مختص کردہ 25کروڑ روپئے جاری نہیں کئے۔

TOPPOPULARRECENT