Friday , September 22 2017
Home / شہر کی خبریں / اوورسیز اسکالر شپس اسکیم ، 16 ستمبر تک امیدواروں کا انتخاب

اوورسیز اسکالر شپس اسکیم ، 16 ستمبر تک امیدواروں کا انتخاب

مستحق طلبہ کو فائدہ پہونچانے کی کوشش ، اقلیتی بہبود کا اجلاس
حیدرآباد ۔  14 ستمبر  (سیاست  نیوز) تلنگانہ میں اقلیتی طلبہ کیلئے اعلان کردہ اوورسیز اسکالرشپ اسکیم کے مستحق امیدواروں کا انتخاب آئندہ دو دن یعنی 16 ستمبر تک مکمل کرلیا جائے گا۔ یہ فیصلہ سکریٹری اقلیتی بہبود سید عمر جلیل کی صدارت میں منعقدہ اعلیٰ سطحی اجلاس میں کیا گیا۔ ڈائرکٹر اقلیتی بہبود جلال الدین اکبر اور دیگر عہدیدار اجلاس میں شریک تھے۔ اسکیم کے اعلان کے بعد امیدواروں کے انتخاب کے سلسلہ میں مقررہ قواعد و ضوابط کی پابندی کے مسئلہ پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ اس اسکیم کے تحت زیادہ سے زیادہ مستحق اقلیتی طلبہ کو فائدہ پہنچایا جائے۔ ابتداء میں اس اسکیم کے لئے 280 امیدواروں کو مستحق قرار دیا گیا تھا جبکہ جملہ درخواستیں 513 داخل کی گئی تھیں۔ مختلف اسنادات اور ضروری امور کی عدم تکمیل کے باعث درخواستوں کو مسترد کیا گیا۔ سید عمر جلیل نے بتایا کہ حکومت نے اس اسکیم کیلئے جو شرائط مقرر کیے ہیں، ان کے مطابق ہی مستحق امیدواروںکا انتخاب ہوگا اور مقررہ شرائط میں کسی رعایت کا امکان نہیں کیونکہ ایس سی اور ایس ٹی طلبہ کیلئے بھی یہی شرائط ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ حکومت نے اس اسکیم کیلئے 25 کروڑ روپئے مختص کئے ہیں اور پہلے مرحلہ میں 15 کروڑ روپئے خرچ کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ حکومت کی جانب سے بجٹ کی اجرائی کیلئے کوششیں جاری ہیں ۔ منتخب امیدواروں کو فضائی کرایہ اور 5لاکھ روپئے کی پہلی قسط ادا کی جائے گی ۔ انہوں نے کہا کہ 87 فیصد مسلم اور 9 فیصد کرسچین امیدواروں کا انتخاب کیا جائے گا جبکہ سکھ، جین ، بدھ اور پارسی طبقات کیلئے ایک ایک نشست الاٹ کی جائے گی۔ خاتون امیدواروں کیلئے 33 فیصد نشستیں الاٹ کی گئی ہیں اور درخواستیں وصول نہ ہونے کی صورت میں ان کی جگہ طلبہ کو منتخب کرلیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت اس بات کی کوشش کرے گی کہ طلبہ معیاری اور نامور یونیورسٹیز میں داخلہ حاصل کریں۔ انہوں نے کہا کہ کئی یونیورسٹیز ایسی ہیں جو معیار کے مطابق نہیں اور وہاں داخلہ کیلئے کسی بھی امتحان میں کامیابی کی شرط نہیں ہے۔ سید عمر جلیل کے مطابق آئندہ دو دنوں میں مقررہ شرائط کے مطابق مستحق امیدواروں کا انتخاب کرتے ہوئے قطعی فہرست آن لائین جاری کردی جائے گی۔ انہوں نے وضاحت کی کہ ضلعی سطح پر شرائط کی عدم تکمیل کی صورت میں بعض درخواستیں مسترد کی گئی تھیں تاہم بعض طلبہ نے شرائط کی تکمیل کے کاغذات پیش کئے جس کے بعد انہیں امیدواروں کی فہرست میں شامل رکھا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ابھی تک باقاعدہ طور پر کسی امیدوار کو منتخب قرار نہیں دیا گیا۔ اسی دوران محکمہ اقلیتی بہبود کے ذرائع نے بتایا کہ موجودہ امیدواروں میں تقریباً 240 مستحق قرار پاسکتے ہیں۔ ذرائع کے مطابق جی آر ای یا جی میاٹ امتحان سے متعلق شرط برقرار رہے گی۔ چاہے یونیورسٹی میں داخلہ کیلئے اس کی ضرورت نہ ہو۔ حکومت چاہتی ہے کہ مکمل قابلیت کے ساتھ مستحق طلبہ نامور یونیورسٹیز میں داخلہ حاصل کریں۔ جاریہ سال سے اس اسکیم پر عمل آوری کو یقینی بنانے کی کوشش کی جارہی ہے۔ اس اسکیم کے بارے میں شرائط کو لیکر پائی جانے والی الجھن سے طلبہ اور اولیائے طلبہ تشویش کا شکار ہیں۔ سید عمر جلیل نے کہا کہ کوئی بھی مستحق اور شرائط کی تکمیل کرنے والا امیدوار اسکیم کے فوائد سے محروم نہیں رہے گا۔

TOPPOPULARRECENT