Saturday , September 23 2017
Home / شہر کی خبریں / اوورسیز اسکالر شپ اسکیم ، دوسرے مرحلہ کیلئے درخواستوں کی وصولی تاریخ میں توسیع پر غور

اوورسیز اسکالر شپ اسکیم ، دوسرے مرحلہ کیلئے درخواستوں کی وصولی تاریخ میں توسیع پر غور

پہلے مرحلہ کے کئی درخواست گذار ہنوز اسکالر شپس سے محروم ، بیرون ملک زیر تعلیم طلبہ کی شکایتوں کا انبار
حیدرآباد۔/15جنوری، ( سیاست نیوز) محکمہ اقلیتی بہبود نے اوورسیز اسکالر شپ اسکیم کے دوسرے مرحلہ کیلئے درخواستیں داخل کرنے کی تاریخ میں توسیع کا فیصلہ کیا ہے تاہم پہلے مرحلہ کی منظورہ درخواستوں کے بیشتر امیدواروں کو ابھی تک اسکالر شپ کی رقم جاری نہیں کی گئی۔ ڈائرکٹر اقلیتی بہبود جلال الدین اکبر نے بتایا کہ دوسرے مرحلہ کیلئے درخواستیں داخل کرنے کی آخری تاریخ میں توسیع کی جائے گی اور سکریٹری اقلیتی بہبود سے مشاورت کے بعد ہفتہ کو باقاعدہ اعلان کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے دوسرے مرحلہ کیلئے جو احکامات جاری کئے ہیں اس میں فبروری تک درخواستوں کے ادخال کی گنجائش موجود ہے۔ اسی دوران پہلے مرحلہ میں منظورہ درخواستوں کو اسکالر شپ کی رقم کی عدم اجرائی سے متعلق شکایات ملی ہیں۔ بیرون ملک یونیورسٹیز میں زیر تعلیم طلباء نے روز نامہ سیاست کو فون پر اس بات کی شکایت کی کہ عہدیدار اگرچہ رقم کی اجرائی کا دعویٰ کررہے ہیں لیکن انہیں ابھی تک رقم حاصل نہیں ہوئی۔ طلباء نے بتایا کہ انہیں دوسرے سیمسٹر کی فیس داخل کرنے میں مالی مشکلات کا سامنا ہے۔ اور اگر حکومت جلد پہلی قسط جاری نہیں کرتی تو ان کا دوسرا سیمسٹر خطرہ میں پڑ سکتا ہے۔کئی منتخب طلباء کے سرپرستوں نے بھی شکایت کی ہے کہ محکمہ اقلیتی بہبود کی جانب سے ابھی تک اسکالر شپ کی پہلی قسط کی اجرائی عمل میں نہیں آئی ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ بعض طلباء کو اسکالر شپ کی رقم اکاؤنٹ میں موصول ہوئی جبکہ بعض کو صرف فضائی کرایہ جاری کیا گیا۔ عہدیداروں کے مطابق 210 منتخب امیدواروں کے منجملہ 179طلباء کی تفصیلات ٹریژری کو روانہ کردی گئی ہیں اور 132طلباء کی اسکالر شپ کی اجرائی کی اطلاع دی گئی لیکن حقیقت میں ایسا نہیں ہے۔ ایک اندازہ کے مطابق 40تا50طلباء کو ہی ابھی تک پہلی قسط کی 5 لاکھ روپئے کی رقم وصول ہوئی ہے۔ سکریٹری اقلیتی بہبود سید عمر جلیل نے عہدیداروں کو اسکالر شپ کی اجرائی سے متعلق تفصیلات پیش کرنے کی ہدایت دی ہے۔ انہوں نے کہا کہ طلباء کے ناموں کے ساتھ فہرست انہیں پیش کی جائے۔ دوسرے مرحلہ کے تحت بتایا جاتا ہے کہ 451 درخواستیں داخل ہوچکی ہیں جن میں 61 لڑکیاں اور390 لڑکے شامل ہیں۔

TOPPOPULARRECENT