Sunday , September 24 2017
Home / سیاسیات / اُتر پردیش اسمبلی سے اپوزیشن کا واک آؤٹ

اُتر پردیش اسمبلی سے اپوزیشن کا واک آؤٹ

چیف منسٹر کی قیامگاہ کے قریب طالبہ کی نعش دستیاب ہونے پر احتجاج
لکھنؤ۔/16فبروری، ( سیاست ڈاٹ کام ) اتر پردیش اسمبلی میں آج اپوزیشن ارکان نے واک آؤٹ کردیا اور ریاست میں امن و قانون کی ابتر صورتحال اور چیف منسٹر کی قیامگاہ کے قریب ایک کمسن لڑکی کی نعش دستیاب ہونے پر تنقید کی۔ آج صبح 11 بجے ایوان کی کارروائی شروع ہوتے ہی اپوزیشن لیڈر سوامی پرساد موریہ ( بی ایس پی) نے یہ مسئلہ اٹھایا اور الزام عائد کیا کہ امن و قانون پر کنٹرول کرنے میں ریاستی حکومت ناکام ہوگئی ہے جس کے باعث سماج میں خوف کا ماحول پیدا ہوگیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ چیف منسٹر کی قیامگاہ کے قریب ایک بارہویں جماعت کی طالبہ کی نعش کی دستیابی سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ شرپسندوں میں پولیس کا خوف برقرار نہیں رہا۔ بعد ازاں موریہ نے اس مسئلہ پر ایوان سے واک آؤٹ کردیا اور اس احتجاج میں کانگریس ارکان بھی شامل ہوگئے۔ انہوں نے یہ شکایت کی کہ ریاستی حکومت امن و قانون پر قابو پانے میں یکسر ناکام ہوگئی ہے۔ ایوان کے باہر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کانگریس مقننہ پارٹی لیڈر پردیپ ماتھر نے کہا کہ حکومت کم از کم امن و قانون کی برقراری کو یقینی بنائے کیونکہ لاقانونیت سے عوام میں برہمی پائی جاتی ہے۔ قبل ازیں ایک طالبہ کی نعش کل ہائی سیکوریٹی زون میں واقع چیف منسٹر کی قیامگاہ کے قریب دستیاب ہوئی تھی، یہ لڑکی 10فبروری کو اسکول کیلئے روانہ ہوئی تھی لیکن مکان واپس نہیں آئی جس پر اس کے والدین نے جانکی پورم پولیس اسٹیشن میں ایف آئی آر درج کروائی تھی۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT