Friday , October 20 2017
Home / شہر کی خبریں / اُردو یونیورسٹی میںسیول سرویسز امتحانات کی کوچنگ کے پہلے بیاچ کا آغاز

اُردو یونیورسٹی میںسیول سرویسز امتحانات کی کوچنگ کے پہلے بیاچ کا آغاز

حیدرآباد26؍ جولائی (پریس نوٹ) ہندوستان میں سیول سرویسز کے امتحانات دنیا کے سب سے مشکل ترین امتحانات ہوتے ہیں۔ ان امتحانات کو مشکل بنانے کے دو بڑے مقاصد ہیں۔ ایک یہ کہ بہتر سے بہتر امیدوار کو ہندوستان کی elite servicesان میں شامل کیا جاسکے اور دوسرے یہ کہ ملک کے مفادات کو دنیا کے سامنے پیش کرنے والوں کو حکومتیں سنجیدہ نگاہ سے دیکھیں۔ان خیالات کا اظہار جناب عبدالقیوم خان، مشیر حکومت تلنگانہ ، نے مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی میں سیول سرویسز امتحانات کی کوچنگ کے نئے بیاچ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ جناب عبدالقیوم خان، مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی کے سیول سرویسز ایگزامینیشن کوچنگ اکیڈیمی کے اعزازی مشیر اعلیٰ ہیں۔ نیا بیاچ جو 105 طلباء اور طالبات پر مشتمل ہے 15 مہینے تک یونیورسٹی کیمپس میں خاص طور پر اسی مقصد کے لیے بنائی گئی عمارت میں سیول سرویسز امتحانات کی تیاری کرے گا۔جلسہ کی صدارت ڈاکٹر شکیل احمد، نائب شیخ الجامعہ نے کی۔جناب جی سدھیر، چیئرمین سدھیر کمیٹی، حکومت تلنگانہ، مہمانِ خصوصی کی حیثیت سے شرکت کی۔ جناب اے کے خان نے کہا کہ سیول سرویسز امتحانات کی مسابقت میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے۔ پچھلے سال تقریباً 9.63 لاکھ طلبہ نے حصہ لیا تھا۔ جس میں سے صرف 1000 کا انتخاب عمل میں آیا۔ انہوں نے ہندوستان کی سیول سروسز کی اہمیت بتاتے ہوئے کہا کہ گذشتہ برسوں کے ایک ٹاپر مسٹر اگروال نے ہانگ کانگ میں سالانہ یافت 6 تا 7 کروڑ کی نوکری چھوڑ کر سیول سرویسز کا حصہ بن گئے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت اپنے باصلاحیت اور قابل نوجوانوں کو کھونا نہیں چاہتی، اس لیے ان کو کافی اچھی تنخواہیں اور سہولیات دی جاتی ہیں۔ڈاکٹر عامر اللہ خان، ڈائرکٹر سی ایس ای اکیڈیمی نے کہا کہ مارچ میں داخلوں کا عمل شروع ہوا تھا اور آن لائن و آف لائن 6000 درخواستیں موصول ہوئیں جن میں انٹرنس ٹسٹ اور انٹرویو کے ذریعہ 105 طلبہ کو منتخب کیا گیا۔

TOPPOPULARRECENT