Wednesday , September 20 2017
Home / ہندوستان / اُروم شرمیلا کا ماں سے ملاقات سے گریز

اُروم شرمیلا کا ماں سے ملاقات سے گریز

امپھال۔ 10 اگست (سیاست ڈاٹ کام) منی پور کی ’’خاتون آہن‘‘ اُروم شرمیلا نے کل دنیا کی طویل ترین بھوک ہڑتال ختم کی لیکن فوج کو خصوصی اختیارات سے متعلق قانون افسپاکی تنسیخ تک اپنے ناخن نہ کاٹنے، بالوں میں کنگھی نہ کرنے اور اپنے گھر نہ جانے کے علاوہ ماں سے ملاقات نہ کرنے کے فیصلے پر اب بھی قائم ہیں۔ اُروم شرمیلا نے 5 نومبر 2000ء کو یہ کہتے ہوئے بھوک ہڑتال شروع کی تھی کہ حکومت کی جانب سے افسپا کی تنسیخ تک ان کا احتجاج جاری رہے گا۔ اس کے ساتھ ساتھ انہوں نے اپنے گھر نہ جانے اور 84 سالہ ماں سکھی دیوی سے بھی اپنا مقصد پورا ہونے تک ملاقات نہ کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔ کل ہڑتال ختم ہونے کے بعد 44 سالہ شرمیلا نے یہ واضح کیا کہ وہ اپنے گھر نہیں جائیں گی اور آشرم میں قیام کریں گی۔ شرمیلا کی صحت پر جواہر لال نہرو انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسس کے ڈاکٹرس نظر رکھے ہوئے ہیں۔ ایک سینئر ڈاکٹر نے بتایا کہ اب بھی شرمیلا کو سیال غذا دی جارہی ہے کیوں کہ کئی سال تک غذا استعمال نہ کرنے کی بنا انہیں فوری ٹھوس غذائیں نہیں دی جاسکتیں۔ شرمیلا کی 16 سال تک ہڑتال کے باوجود بہتر صحت کا راز ان کا جذبہ خود اعتمادی اور روزانہ یوگا کی مشق بتایا گیا ہے۔ شرمیلا کے بھائی اُروم سنگھاجیت  نے کہا کہ ان کی بہن میں غیر معمولی خود اعتمادی پائی جاتی ہے اور وہ روزانہ یوگا کے ذریعہ خود کو جسمانی طور پر فٹ رکھتی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT