Monday , July 24 2017
Home / Top Stories / اِدارۂ سیاست کی تحریک کی مہک سے دنیا کے گوشے گوشے معطر

اِدارۂ سیاست کی تحریک کی مہک سے دنیا کے گوشے گوشے معطر

شادی میں اسلام کے نظام معاشرت کو ملحوظ رکھنے کی تلقین، دوبدو پروگرام سے جناب افتخار شریف چیرمین نیشنل بنکارڈ کارپوریشن شکاگو کا خطاب

حیدرآباد۔ 15 جنوری (دکن نیوز) جناب افتخار شریف چیرمین نیشنل بنکارڈ کارپوریشن (شکاگو) نے آج مسلم والدین پر زور دیا کہ شادی بیاہ کے معاملات میں دینداری ‘ سادگی اور کفایت شعاری کو اختیار کریں اور اسلام کے نظام معاشرت کو پیش نظر رکھیں ۔ انہوں نے کہا کہ دوبہ دو ملاقات پروگرام کے ذریعہ ادارہ سیاست اور ایم ڈی ایف ایک جامع ٹھوس اور منفرد پلیٹ فارم فراہم کیا ہے جس کے تحت لڑکے اور لڑکیوں کے والدین اور سرپرست باہمی تبادلہ خیال کے ذریعہ اپنی پسند کے رشتوں کا انتخاب کرسکتے ہیں ۔ جناب افتخار شریف آج رائیل ریجنسی گارڈن (آصف نگر) میں 71 ویں دو بہ دو ملاقات پروگرام کو مخاطب کر رہے  تھے جس میں تین ہزار سے زائد والدین اور سرپرستوں نے شرکت کی ۔ انہوں نے بحیثیت مہمان خصوصی اپنی تقریر میں جناب زاہد علی خان اور جناب ظہیرالدین علی خان کی تحریک کو ملت اسلامیہ کے لئے فال نیک قرار دیتے ہوئے کہاکہ اس کے اثرات کی مہک حیدرآباد سے پھیل کر دنیا کے گوشے گوشے کو معطر کر رہی ہے ۔ انہوں نے کہاکہ عصری ٹیکنالوجی کے ذریعہ جناب ظہیرالدین علی خان نے دوبہ دو ملاقات پروگرام کو ایک نئے ویژن سے  ہمکنار کیا ہے ۔ جناب عابد صدیقی صدر ایم ڈی ایف نے دوبہ دو ملاقات پروگرام کی صدارت کی ۔ جناب فیصل بن علی القیعطی پروپرائٹر رائیل ریجنسی گارڈنس اور مولانا عبدالملک مظاہری خطیب مسجد فردوس وجئے نگر کالونی نے مہمانان خصوصی کی حیثیت سے شرکت کی ۔ مولانا مظاہری نے اس موقع پر اپنے خطاب میں کہا کہ دوبہ دو ملاقات مسلمانوں کی فلاح و بہبود والا پروگرام ہے۔ اس کے ذریعہ گذشتہ کئی برسوں سے معاشرہ میں حوصلہ افزاء اور نمایاں تبدیلیاں رونما ہو رہی ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ آج زمانہ کی رفتار تیزرو ہوگئی ہے اور حالات اس طرح پیدا کئے جا رہے ہیں کہ مسلمانوں کے لئے اپنے رہن پر قائم رہنا اور اپنے تشخص کو برقرار رکھنا مشکل مسئلہ ہوگیا ہے۔ اس ماحول میں ضروری ہے کہ مسلمان قرآنی احکامات اور حضور اکرمؐ کی تعلیمات کی پاسداری کریں ۔ شادی بیاہ کے معاملات کی احکام الہی کی روشنی میں یکسوئی کریں ۔ لڑکوں کے والدین لڑکیوں میں عیب ڈھونڈنے کے بجائے خوبیاں تلاش کرنے کا رجحان اختیار کریں ۔ انہوں نے کہا کہ اللہ تعالیٰ نے قرآن میں کہاکہ برکت والا نکاح وہ ہے جس میں کم سے خرچ ہو ۔ مولانا عبد الملک نے مسلمانوں سے اپیل کی کہ وہ اپنے معاملات زندگی میں اللہ کا خوف پیدا کریں اور ان رسومات سے گریز کریں جو اللہ اور اس کے رسولؐ کو ناپسند ہیں۔ جناب عابد صدیقی نے کہا کہ سیاست اور ایم ڈی ایف کا مقصد ملت اسلامیہ کو درپیش سنگین مسائل کو حل کرنا ہے جن میں آج سب سے بڑا مسئلہ مسلم شادیوں میں لین دین ‘ اسراف اور فضول خرچی اور غیر اسلامی رسومات کی فراوانی ہے ۔ انہوں نے والدین سے کہا کہ وہ رشتوں کے انتخاب میں شرافت ‘ حسن اخلاق اور دینداری کو بنیادی معیار بنائیں ۔ دوسروں کے مشوروں سے زیادہ رشتوں کے طئے کرنے میں خود فیصلہ کرنے کی عادت ڈالیں ۔ انہوں نے کہا کہ شادی طئے کرنے کے سلسلہ میں نیت کو نمایاں اہمیت حاصل ہے اور نیت پر ہی ہمارے کام بہتر یا بدتر ہوسکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس موقع پرجناب زاہد علی خان کی تحریک کے دوررس اور خوشگوار اثرات کا بھی ذکر کیا۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT