Friday , August 18 2017
Home / Top Stories / آئی ایس کے خلاف بھی امریکہ سے کوئی تعاون نہیں

آئی ایس کے خلاف بھی امریکہ سے کوئی تعاون نہیں

امریکہ آج بھی ہمارا دشمن نمبر ایک : اعلی مذہبی رہنما آیت اللہ علی خامنہ ای کا خطاب
تہران 3 جون ( سیاست ڈاٹ کام ) ایران کے اعلی مذہبی رہنما نے آئی ایس کے خلاف بھی امریکہ سے کسی تعاون کا امکان مسترد کردیا اور کہا کہ امریکہ اب بھی ایران کا دشمن نمبر ایک ہے حالانکہ ایران نیوکلئیر مسئلہ پر عالمی طاقتوں کے ساتھ معاہدہ کرچکا ہے ۔ مذہبی رہنما آیت اللہ علی خامنہ ای نے کہا کہ امریکہ پر بھروسہ کرنا بہت بڑی غلطی ہوگی ۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ کے ساتھ اگر تعاون کیا جاتا ہے تو یہ ایران کی آزادی کی قیمت پر ہوگا ۔ ایران اور امریکہ کے مابین آئی ایسک ے خلاف کسی مشترکہ جدوجہد یا صرف تعاون کیلئے بھی کوئی رسمی بات چیت نہیں ہوئی ہے اس کے باوجود علی خامنہ ای کے ریمارکس تعجب خیز ہی ہیں کیونکہ یہ تاثر پایا جا رہا تھا کہ آئی ایس کے خلاف لڑائی کے مسئلہ میں امریکہ اور ایران کے مابین دوریاں کم ہوئی ہیں۔ عراق میں ایران کے طاقتور انقلابی گارڈز میدان پر موجود ہیں اور وہاں وہ شیعہ میشلیا اور عرقی فورسیس کی مدد کر رہے ہیں تاکہ وہ فلوجہ میں شدید کارروائیوں کے ذریعہ آئی ایس کو وہاں سے بیدخل کرسکیں۔ فلوجہ بغداد کے جنوب مغرب میں ہے اور یہ آئی ایس کا طاقتور گڑھ سمجھا جاتا تھا ۔ تاہم خامنہ ای کا کہنا تھا کہ امریکہ اور ایران کے مابین نیوکلئیر مسئلہ پر اتفاق رائے اور عالمی طاقتوں سے ہوئے معاہدہ کے باوجود ایران کے کئی چھوٹے اور بڑے دشمن موجود ہیں اور اس کیلئے سب سے اول نمبر کا دشمن امریکہ ‘ برطانیہ اور اسرائیل ہیں۔ ایران نے عالمی طاقتوں کے ساتھ جو معاہدہ کیا ہے اس پر جاریہ سال سے ہی عمل آوری ہونے والی ہے ۔ علی خامنہ ای انقلاب ایران کے رہنما آیت اللہ روح اللہ خمینی کی 27 ویں برسی کے موقع پر خطاب کر رہے تھے ۔ ہزاروں ایرانی باشندوں نے اس تقریب میں شرکت کی جبکہ سرکاری ٹی وی پر خامنہ ای کی دیڑھ گھنٹے کی تقرار کو راست پیش کیا گیا ۔ دونوں ملکوں کے مابین نیوکلئیر مسئلہ پر طویل وقت تک سفارتی رسہ کشی ہوتی رہی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT