Saturday , August 19 2017
Home / کھیل کی خبریں / آج ہند ۔ افریقہ تیسرا ونڈے ، دونوں ہی ٹیمیں سبقت کیلئے کوشاں

آج ہند ۔ افریقہ تیسرا ونڈے ، دونوں ہی ٹیمیں سبقت کیلئے کوشاں

m دھون ، کوہلی اور رائنا کا ناقص فام تشویش کا باعث
m ہاشم آملہ سے مہمان ٹیم کو بڑی اننگز کی اُمید، مقابلہ کا آغاز 1.30 بجے
راجکوٹ 17 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) گزشتہ مقابلہ میں کامیابی حاصل کرتے ہوئے سیریز کو 1-1 سے برابر کرنے کے بعد ہندوستانی کرکٹ ٹیم کے حوصلے بلند ہیں اور وہ کل یہاں جنوبی افریقہ کے خلاف کھیلے جانے والے ایک اہم مقابلہ میں اس کامیابی کے سلسلہ کو برقرار رکھنے کے لئے کوشاں ہے۔ 14 اکٹوبر کو کھیلے گئے مقابلہ میں ہندوستانی ٹیم جس نے 22 رنز کی ایک اہم اور شاندار کامیابی حاصل کی تھی جس میں مہندر سنگھ دھونی کا آل راؤنڈ مظاہرہ تھا۔ جیسا کہ پہلے انھوں نے بحیثیت کپتان سولہویں سنچری 92 رنز کی شکل میں بنائی۔ جس کے بعد وکٹوں کے پیچھے بھی ان کے مظاہرے بہتر رہے۔ اِن شاندار مظاہروں کے ذریعہ انھوں نے اپنے ناقدین کو ایک بہتر جواب دیا ہے کیوں کہ اِس سے قبل کئی سابق کھلاڑی دھونی کے قطعی 11 کھلاڑیوں میں مقام پر سوالیہ نشان لگارہے تھے۔ دھونی کا مظاہرہ اِس لئے بھی اہم ہے کیوں کہ جس موقع پر ہندوستانی ٹیم 30 اوورس کے وقفہ میں 6 وکٹوں کے نقصان پر صرف 124 رنز ہی بنا پائی تھی تب دھونی نے اپنی ناقابل تسخیر اننگز کے دوران 86 گیندوں کا سامنا کرتے ہوئے 7 چوکوں اور 4 چھکوں کے ذریعہ ٹیم کے مجموعی اسکور کو 247 تک پہنچایا ہے۔ اِس کامیابی کے ذریعہ ہندوستانی ٹیم کو جنوبی افریقہ کے خلاف نفسیاتی سبقت ضرور حاصل رہے گی

 

لیکن ابتدائی مقابلہ میں 5 رنز کی شکست نے بھی ہندوستان کے لئے نقصان کیا ہے اور ٹاپ آرڈر کے ناکام مظاہرے ہندوستان کے لئے ہنوز تشویش کا باعث ہیں۔ ٹسٹ ٹیم کے کپتان ویراٹ کوہلی، سریش رائنا کے علاوہ اوپنر شکھر دھون کے ابتدائی دو مقابلوں میں مایوس کن مظاہرہ ہندوستان کے لئے نقصان دہ ثابت ہوچکے ہیں۔ مذکورہ کھلاڑی کل یہاں پر کھیلے جانے والے مقابلہ میں بہتر مظاہرہ کی اِس لئے بھی اُمید کرسکتے ہیں کیوں کہ جنوری 2013 ء کو انگلینڈ کے خلاف یہاں 50 اوورس کے افتتاحی مقابلہ سے یہ بات ثابت ہوئی ہے کہ یہ وکٹ بیاٹنگ کے لئے انتہائی سازگار ہے۔ دوسری جانب جنوبی افریقی ٹیم کے لئے کپتان اے بی ڈی ویلئرس اور فاپ ڈوپلیسی نے ٹاپ آرڈر میں بہترین مظاہرے کئے ہیں لیکن مہمان ٹیم کو ہاشم آملہ کے ہمراہ دوسرے اوپنر کوئنٹن ڈی کاک سے ایک بڑی اننگز کی اُمید ہے۔ ڈیوڈ ملر کا ناقص فارم افریقی ٹیم کے لئے تشویش کا باعث ہے کیوں کہ جارحانہ بیاٹنگ کے لئے مشہور ملر مسلسل ناقص فارم کا شکار ہیں جس کا ٹیم پر کافی اثر پڑرہا ہے۔ بولنگ شعبہ میں ڈیل اسٹین کے ہمراہ کیاگیسو ربڑا کے ساتھ مرنی مرکل ہندوستانی بیٹسمنوں کو پریشان کررہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT