Thursday , September 21 2017
Home / شہر کی خبریں / آر ٹی سی کو نفع بخش بنانے کے سی آر کی مساعی: ہریش راؤ

آر ٹی سی کو نفع بخش بنانے کے سی آر کی مساعی: ہریش راؤ

ملازمین کو فٹمنٹ کی منظوری اور مسافرین کیلئے سہولت چیف منسٹر کا کارنامہ
حیدرآباد 9 اگسٹ (سیاست نیوز) تلنگانہ اسٹیٹ روڈ ٹرانسپورٹ کارپوریشن کی کارکردگی کو فعال بناتے ہوئے کارپوریشن کو ترقی دینے اور نفع بخش بنانے پر چیف منسٹر کے چندرشیکھر راؤ اولین توجہ مرکوز کئے ہوئے ہیں۔ آج ٹی ایس آر ٹی سی میں یونین کے مسلمہ موقف حاصل کرنے میں ٹی ایم یو کی کامیابی پر جشن فتح کے سلسلہ میں آج یہاں منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر آبپاشی ٹی ہریش راؤ نے یہ بات کہی اور بتایا کہ آر ٹی سی کے تعلق سے مکمل معلومات رکھنے والے چندرشیکھر راؤ واحد شخصیت ہیں اور آر ٹی سی کی کارکردگی کا جائزہ لینے کے لئے اعلیٰ عہدیداروں اور ورکروں کی نمائندگی کرنے والے قائدین کے ساتھ دو روزہ اجلاس طلب کرنے والے بھی چندرشیکھر راؤ واحد چیف منسٹر ہیں۔ جبکہ سابقہ حکومتوں نے کبھی آر ٹی سی کی کارکردگی پر کوئی توجہ نہیں دی تھی۔ لیکن ٹی آر ایس کی زیرقیادت تلنگانہ حکومت ٹی ایس آر ٹی سی کی کارکردگی کو بہتر و فعال بناتے ہوئے نفع بخش بنانے کے اقدامات کررہی ہے اور ساتھ ہی ساتھ آر ٹی سی کو قرضوں کے بوجھ سے باہر لانے کے لئے چیف منسٹر ممکنہ کوشش کرنے میں مصروف ہیں۔ وزیر موصوف نے چیف منسٹر کی زبردست ستائش کرتے ہوئے کہاکہ آر ٹی سی میں کنٹراکٹ سسٹم کو منسوخ کرنے کے اقدامات بھی چندرشیکھر راؤ نے ہی کئے۔ انھوں نے یاد دلایا کہ آر ٹی سی ملازمین کی کم تنخواہوں کا پاس و لحاظ رکھتے ہوئے ہی آر ٹی سی ملازمین کی تنخواہوں میں اضافہ کرنے کے لئے 44 فیصد فٹمنٹ دینے کا سہرا بھی چندرشیکھر راؤ کے ہی سر جاتا ہے۔ انھوں نے کہاکہ آر ٹی سی بسوں میں سفر کرکے عوام میں محفوظ سفر کا احساس ہوتا ہے۔ انھوں نے اس توقع کا اظہار کیاکہ بہت جلد تلنگانہ اسٹیٹ روڈ ٹرانسپورٹ کارپوریشن نفع بحش بننے کی سمت گامزن ہوگا۔ ہریش راؤ نے مزید بتایا کہ چیف منسٹر کی خصوصی دلچسپی و ہدایت کیر وشنی میں ہی گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن کی جانب سے ٹی ایس آر ٹی سی کو 18 کروڑ روپئے کی رقم فراہم کرنا بھی چندرشیکھر راؤ کا ہی کارنامہ ہے۔ اس تقریب سے وزیرداخلہ این نرسمہا ریڈی، وزیر ٹرانسپورٹ پی مہیندر ریڈی، صدرنشین ٹی ایس آر ٹی سی ایس ستیہ نارائنا، منیجنگ ڈائرکٹر ٹی ایس آر ٹی سی جی وی رمنا راؤ کے علاوہ دیگر عہدیداروں نے بھی مخاطب کیا۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT