Tuesday , September 26 2017
Home / Top Stories / آسام میں بی جے پی کی کامیابی کیلئے آر ایس ایس کا اہم رول

آسام میں بی جے پی کی کامیابی کیلئے آر ایس ایس کا اہم رول

کانگریس کی شکست کی ذمہ داری قبول، ترون گوگوئی کا بیان
گوہاٹی۔25 مئی (سیاست ڈاٹ کام) سابق چیف منسٹر ترون گوگوئی نے آج آسام اسمبلی انتخابات میں کانگریس کی شکست کیلئے اپنی اخلاقی ذمہ داری قبول کرلی ہے اور عوام کی توقعات کی عدم تکمیل پر معذرت خواہی کا اظہار کیا ہے۔ مسٹر گوگوئی نے پر ہجوم میڈیا کانفرنس کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ انتخابات میں شکست کے لئے میں خود ذمہ دار ہوں اگر میں نے یہ اعتراف نہیں کیا تو دوسرا کون کرے گا؟ انہوں نے بتایا کہ ممکن ہے کہ ان کی حکومت سے عوام کو توقعات پوری نہیں کی ہوں جس کے نتیجہ میں کانگریس کو شکست سے دوچار ہونا پڑا۔ ناقابل توقع شکست کی وجوہات کا جائزہ لیا جائیگا۔ چوں کہ ہم سے کچھ غلطیاں سرزد ہوئی ہیں، جس کے لئے عوام سے معذرت خواہ ہیں اور اب ہم کانگریس کو مضبوط اور ازسرنو منظم کرنے کی کوشش کریں گے۔ انہوں نے یہ دعوی کیا کہ اس مرتبہ بھی 1985ء جیسی صورتحال درپیش تھی اس وقت بیرونی شہریوں کے مسئلہ پر آسام گن پریشد اقتدار میں آئی تھی اور حالیہ انتخابات میں یہی مسئلہ چھایا رہا۔ اس وقت اے جی پی نے فائدہ اٹھالیا تو اب کی بار بی جے پی نے جذبات کا استحصال کیا اور وہ آسامیوں اور ہندوئوں میں تفرقہ پیدا کرنے میں کامیاب ہوگئی اگرچہ ہم نے دراندازی کے مسئلہ پر اقدامات کئے تھے لیکن آر ایس ایس نے جس طریقہ سے یہ مسئلہ پیش کیا ہم قیاس بھی نہیں کرسکتے۔ انہوں نے یہ انکشاف کیا کہ انتخابات کے دوران 25 ہزار آر ایس ایس کارکنان سرگرم تھے اور کہا کہ کانگریس کارکنوں کو مایوس ہونے کی ضرورت نہیں ہے کیوں کہ آسام کے 31 فیصد عوام نے پارٹی کو ووٹ دیا ہے۔ جبکہ بی جے پی کو صرف 29 فیصد اور بی جے پی کی زیر قیادت اتحاد کو 41 فیصد ووٹ حاصل ہوئے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ سال 2011ء میں ہمیں 39 فیصد ووٹ حاصل ہوئے تھے اگرچیکہ اس مرتبہ گراوٹ آئی ہے لیکن 2014 کے لوک سبھا انتخابات کے مقابل اضافہ ہوا ہے۔ مسٹر ترون گوگوئی نے 15 سال تک خدمات کا موقع دینے پر عوام سے اظہار تشکر کیا۔ گوکہ بیشتر شعبوں میں کامیابی اور بعض شعبوں میں ناکامیاں ہوئی ہیں ۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے سرگرم سیاست سے سبکدوش ہونے سے انکار کردیا اور کہا کہ 2019ء کے لوک سبھا انتخابات کی تیاری کریں گے۔ انہوں نے بتایا کہ کانگریس حکومت کو بیروزگاری، سیلاب کی تباہ کاریاں، کرپشن اور ایمگریشن (غیرقانونی تارکین وطن) جیسے مسائل کا سامنا تھا اور توقع ہے کہ بی جے پی کی زیر قیادت نئی حکومت ان مسائل پر توجہ دے گی۔

TOPPOPULARRECENT