Thursday , August 17 2017
Home / کھیل کی خبریں / آفریدی کا سنٹرل کنٹراکٹ کارکردگی سے مشروط : شہریار

آفریدی کا سنٹرل کنٹراکٹ کارکردگی سے مشروط : شہریار

لاہور ، 9 مئی (سیاست ڈاٹ کام) پاکستان کرکٹ بورڈ(پی سی بی) کے چیئرمین شہریار خان نے کہا ہے کہ نیشنل ٹیم کے سابق کپتان شاہد آفریدی کیلئے سنٹرل کنٹراکٹ کا دارومدار اُن کی کارکردگی پر ہے۔ ورلڈ ٹی ٹوئنٹی کی ناکام مہم کے بعد آفریدی نے نیشنل ٹیم کی قیادت سے استعفیٰ دے دیا تھا جبکہ انضمام الحق کی زیرسربراہی سلیکشن کمیٹی نے نوجوان کھلاڑیوں کو مواقع فراہم کرنے کیلئے دورۂ انگلینڈ کے ممکنہ کھلاڑیوں کی فہرست میں سابق کپتان کا نام شامل نہیں کیا۔ ممکنہ کھلاڑیوں میں عدم شمولیت کے باوجود سنٹرل کنٹراکٹ میں شامل کھلاڑیوں کی ٹریننگ کیمپ میں شرکت لازمی ہے لیکن آفریدی نے گھٹنے میں تکلیف کی وجہ بتاتے ہوئے کیمپ میں شرکت سے معذرت کر لی۔ اسٹار آل راؤنڈر نے کہا کہ ’’میں انگلش کاؤنٹی میں ہمپشائر کی نمائندگی کیلئے مکمل فٹنس حاصل کرنا چاہتا ہوں، لہٰذا میں جیسے ہی سلیکشن کیلئے دستیاب ہوں گا، فٹنس ٹسٹ دے دوں گا‘‘۔ تاہم اب نیشنل ٹیم میں شمولیت کیلئے کوشاں  آفریدی کو سنٹرل کنٹراکٹ ملنے کے بھی لالے پڑ گئے ہیں۔ ’ڈان‘ سے خصوصی گفتگو میں شہریار خان نے کہا کہ انجری کے سبب آفریدی کے کیمپ میں شرکت نہ کرنے کے باوجود اصل توجہ اُن کی کارکردگی پر ہی ہوگی۔ اس موقع پر جب اُن سے سوال کیا گیا کہ آیا گزشتہ سال کی طرح سابق کپتان براہ راست سنٹرل کنٹراکٹ حاصل کرنے میں کامیاب رہیں گے تو پی سی بی چیئرمین نے کہا کہ ایسے کنٹراکٹ میں اسٹار آل راؤنڈر کی شمولیت کا انحصار سلیکشن کمیٹی پر ہے۔ تینوں فارمٹ میں پاکستان کی قیادت کرنے والے سابق کپتان پی سی بی کے سنٹرل کنٹراکٹ کی اے کیٹیگری میں شامل ہیں، جس کی میعاد کا اختتام 30 جون کو ہو گا۔ شہریار خان نے تصدیق کی کہ آنے والے دورۂ انگلینڈ میں انتخاب عالم ہی نیشنل ٹیم کے منیجر ہوں گے کیونکہ انہوں نے حالیہ دنوں میں اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا۔ شہریار نے کہا کہ بولنگ کوچ کی تقرری کا فیصلہ ہیڈ کوچ مکی آرتھر سے مشاورت کے ساتھ کیا جائے گا جبکہ بیٹنگ کوچ گرانٹ فلاور اور گرانٹ لیوڈن کے مستقبل کا فیصلہ بھی آرتھر کی پاکستان آمد پر پی سی بی حکام سے ملاقات کے بعد کیا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT