Thursday , March 23 2017
Home / شہر کی خبریں / اپریل و مئی میں درجہ حرارت 47 ڈگری ہوسکتا ہے

اپریل و مئی میں درجہ حرارت 47 ڈگری ہوسکتا ہے

محکمہ موسمیات کی پیش قیاسی ۔ عوام شدت کی گرمی سے مقابلہ کیلئے تیار رہیں
حیدرآباد 3 مارچ ( پی ٹی آئی ) تلنگانہ اور آندھرا پردیش کے عوام کو ایسا لگتا ہے کہ جاریہ سال موسم گرما میں شدت کی گرمی کیلئے خود کو تیار رکھنا پڑے گا کیونکہ محکمہ موسمیات نے پیش قیاسی کی ہے کہ جاریہ سال موسم گرما کے آئندہ مہینوں میں درجہ حرارت معمول سے زیادہ ہوسکتا ہے۔ ڈائرکٹر محکمہ موسمیات حیدرآباد وائی کے ریڈی نے پی ٹی آئی کو بتایا کہ گرما کی شدت گذشتہ سال کی طرح ہی ہوسکتی ہے ۔ گذشتہ سال بھی درجہ حرارت معمول سے ایک ڈگری زیادہ ریکارڈ کیا گیا تھا اور جاریہ سال بھی ایسی ہی صورتحال ہوسکتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ آئندہ دو مہینوں میں تلنگانہ اور آندھرا پردیش میں شدید گرمی کی لہر جیسے حالات پیدا ہوسکتے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ ماہ اپریل اور ماہ مئی کے کچھ ایام میں درجہ حرارت 47 ڈگری سلسئیس تک پہونچ سکتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ان دونوں مہینوں کے اکثر ایام میں درجہ حرارت 45 ڈگری تک ہوسکتا ہے ۔ نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھاریٹی نے گذشتہ ہفتے کہا تھا کہ وہ مجوزہ موسم گرما میں گرمی کی لہر سے نمٹنے کیلئے ایک ایکشن پلان تیار کرے گی ۔ اس کا کہنا تھا کہ گرمی کی لہر سے متعلق اموات کو 2015 کی بہ نسبت 2016 میں کم کیا جاسکا تھا ۔ اس کیلئے ایک ایکشن پلان ریاستوں کو روانہ کیا گیا تھا ۔ نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھاریٹی کے جوائنٹ سکریٹری تھروپوگز نے قبل ازیں کہا تھا کہ ہندوستان میں 1992 سے 2015 کے دوران ملک میں گرمی سے متعلق وجوہات سے 22,000 افراد ہلاک ہوئے تھے ۔ انہوں نے کہا تھا کہ 2015 میں 2,400 اور 2016 میں 1,100 اموات ہوئی تھیں۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT