Thursday , October 19 2017
Home / سیاسیات / اپوزیشن اب 2019پر توجہ دے عمر عبداللہ کا مشورہ

اپوزیشن اب 2019پر توجہ دے عمر عبداللہ کا مشورہ

سرینگر۔9 اگست (سیاست ڈاٹ کام) سابق چیف منسٹر جموں و کشمیر عمر عبداللہ نے آج کہا کہ کانگریس لیڈر احمد پٹیل کی گجرات راجیہ سبھا چنائو میں جیت اتنی مشکل تو ہونی ہی نہیں چاہئے تھی اور اب اپوزیشن کو محاسبہ کرتے ہوئے اپنی توجہ اور حکمت عملی 2019ء عام انتخابات میں بی جے پی کا مقابلہ کرنے اور اسے ہرانے کی طرف منتقل کرنے کی ضرورت ہے۔ عمر نے الیکشن کمیشن کی تعریف کی کہ وہ مرکز کی طرف سے دبائو جھیلنے میں کامیاب رہا۔ کارگزار صدر نیشنل کانفرنس نے ٹوئٹر پر تحریر کیا کہ ’’اب جبکہ احمد بھائی جیت گئے جو بہت اچھی تبدیلی ہے لیکن اتنی مشکل تو ہونا ہی نہیں چاہئے تھی۔ احتساب کی ضرورت ہے اور ہماری پوری توجہ 2019ء پر مرکوز کرنا ہوگا۔ ہمیں اور کیا ثبوت چاہئے کہ ہم تمام اپوزیشن پارٹیوں کو بے رحم اچھی طریقہ سے تربیت یافتہ بی جے پی سیاسی مشین کے خلاف لڑنا ہے۔‘‘

 

لوک سبھا اسپیکر نے ‘بھارت جوڑو’ تحریک کی اپیل کی
نئی دہلی، 9 اگست (سیاست ڈاٹ کام) لوک سبھا اسپیکر سمترا مہاجن نے بھارت چھوڑو تحریک کی 75 ویں سالگرہ کے موقع پر مجاہدین آزادی کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے ‘بھارت جوڑو تحریک’ شروع کرنے کی آج ا پیل کی اور “سوراج ہمارا پیدائشی حق ہے اور میں اسے پورا کروں گا ہی “کا نیا نعرہ دیا۔ سمترا مہاجن نے ایوان میں اس موقع پر منعقدہ خصوصی بحث کے شروع میں کہا کہ آج ہم سب بھارت چھوڑو تحریک میں شہید ہوئے ان بینام بہادروں کو بھی خراج تحسین پیش کرتے ہیں جن کے دل میں حب الوطنی کا جذبہ ہمیشہ روشن رہا اور مشعل جلتی رہی، جن آنکھوں میں آزاد ہندوستان کے خواب تھے ۔
ان بہادروں، عظیم لوگوں اور ان کے نقطہ نظر کو سمجھنے نیز اس کی تبلیغ کرنے کا فرض ہمارا ہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جس جوش، ہمت، قرارداد، ایمان، عزم اور اعتماد کے ساتھ ہم نے آزادی پائی تھی، انہی خصوصیات کو دوبارہ زندہ کرکے ہم اپنے خواب کا بہترین، مضبوط، خوشحال اور عالمی اہمیت کا حامل ہندوستان بنا سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا، “ہمارے مجاہدین آزادی نے تب کہا تھا، ‘بھارت چھوڑو’۔ اب ہمیں بھارت جوڑوتحریک کی ضرورت ہے ۔”انہوں نے کہا کہ یہ ایک ایسی تحریک ہے ، جو کشمیرسے کنیا کماری تک ملک کے تمام حصوں میں چلائی جائے تاکہ ایک طاقتور اور منظم ملک کی تعمیر کی جا سکے ۔

 

 

TOPPOPULARRECENT