Tuesday , October 17 2017
Home / Top Stories / اپوزیشن سے تعاون کی اپیل، وینکیا نائیڈو اور ارون جیٹلی کا بیان، مختلف جماعتوں کی تائید کا ادعا

اپوزیشن سے تعاون کی اپیل، وینکیا نائیڈو اور ارون جیٹلی کا بیان، مختلف جماعتوں کی تائید کا ادعا

نئی دہلی، 4 فروری (سیاست ڈاٹ کام ) مرکزی وزیر پارلیمانی امور وینکیا نائیڈو نے آج کہا کہ اس بار پارلیمنٹ کے بجٹ سیشن میں حکومت کو طویل عرصے سے زیر التوا اور انتہائی اہمیت کی حامل جی ایس ٹی بل اور رئیل اسٹیٹ اورانسالوینسی اینڈ بنیک رپسی جیسے اہم بلوںکو منظورکئے  جانے کی امید ہے ۔ مسٹر نائیڈو نے یہاں پارلیمنٹ کے بجٹ سیشن کی تاریخوں کی اطلاع دینے کے موقع پر میڈیا سے کہا کہ ایسے وقت میں جبکہ ملک ترقی کی راہ پر گامزن ہے ، وہ تمام جماعتوں سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ ان اہم بلوں کو منظور کرانے میں مکمل تعاون کریں۔پارلیمنٹ کا بجٹ اجلاس 23 فروری سے شروع ہوگا۔ اس دن صدر پرنب مکھرجی پارلیمنٹ کے مرکزی ہال میں دونوں ایوانوں کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کرینگے ۔ وزیر ریلوے سریش پربھو 25 فروری کو ریل بجٹ پیش کرینگے ۔ 29 فروری کو وزیر خزانہ ارون جیٹلی عام بجٹ پیش کرینگے ۔ وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ کی صدارت میں کابینہ کی پارلیمانی امور کمیٹی کی آج یہاں ہوئی میٹنگ میں پارلیمنٹ بجٹ سیشن کے وسیع پروگرام کو حتمی شکل دی گئی۔اسکے مطابق بجٹ سیشن کا پہلا مرحلہ 23 فروری سے 16 مارچ تک چلے گا اور دوسرا مرحلہ 23 مارچ  سے 16 اپریل تک رہے گا۔

اجلاس کی سابق پارلیمانی کمیٹی نے پانچ ریاستوں میں اسمبلی انتخابات کو ذہن میں رکھتے ہوئے مختلف سیاسی جماعتوں کے رہنماؤں کے ساتھ بجٹ سیشن کی تاریخوں کے بارے میں تفصیل سے تبادلہ خیال کیا اور ان کی تجاویز کے بعد ہی بجٹ سیشن کے پروگراموں کو حتمی شکل دی گئی۔آئندہ سیشن میں حکومت اپنے قانون سازی کے ایجنڈے کو آگے بڑھانے کی ہر ممکن کوشش کرے گی کیونکہ گزشتہ سیشن میں اپوزیشن کے ہنگامے کی وجہ سے کئی اہم بل منظور نہ ہوسکے تھے ۔ دوسری طرف اپوزیشن دلت طالب علم روہت ویمولا کی خودکشی اور اروناچل پردیش میں صدر راج لگانے سمیت کئی مسائل پر حکومت کو گھیرنے کی تیاری کر سکتا ہے ۔وزیرفینانس ارون جیٹلی نے بھی توقع ظاہر کی کہ اپوزیشن جماعتیں جی ایس ٹی بل کے بارے میں مثبت طرز عمل اختیار کریں گے اور یہ بل عنقریب حقیقت کا روپ اختیار کرلے گا۔ انہوں نے دو روزہ انڈیا انوسٹمنٹ چوٹی اجلاس کے افتتاح کے موقع پر کہا کہ اس بل کی کئی سیاسی جماعتوں نے تائید کی ہے اور انہیں یقین ہیکہ بہت جلد اسے راجیہ سبھا میں منظور کرلیا جائے گا۔ انہوں نے کہ کہ حکومت ڈائرکٹ ٹیکس نظام کو بہتر بنانے کیلئے بھی اقدامات کررہی ہے۔

TOPPOPULARRECENT