Saturday , September 23 2017
Home / سیاسیات / اپوزیشن کا مقابلہ کرنے کیلئے آج این ڈی اے کی حکمت عملی پر تبادلہ خیال

اپوزیشن کا مقابلہ کرنے کیلئے آج این ڈی اے کی حکمت عملی پر تبادلہ خیال

……  ( پارلیمنٹ سرمائی اجلاس میں گرما گرم بحث کا امکان)  ……
اشتعال انگیز ریمارکس پر 5 مرکزی وزراء کو بیدخل کردینے جنتا دل متحدہ کا مطالبہ
نئی دہلی۔/17نومبر، ( سیاست ڈاٹ کام ) بہار میں شکست کے بعد پارلیمنٹ کا سرمائی اجلاس ہنگامہ خیز ہونے کے امکان کے پیش نظر حکومت نے کل این ڈی اے قائدین کا اجلاس طلب کیا ہے تاکہ ایک ماہ طویل اجلاس کے دوران باہمی تعاون اور لائحہ عمل پر تبادلہ خیال کیا جاسکے۔ پارلیمنٹ کا اجلاس 26نومبر سے شروع ہوگا۔ اجلاس میں عدم تحمل کو موضوع بحث بنانے کا اشارہ دیتے ہوئے جنتا دل متحدہ کے جنرل سکریٹری مسٹر کے سی تیاگی نے آج بتایا کہ وزیر اعظم نریندر مودی کو چاہیئے کہ اشتعال انگیز ریمارکس کرنے والے 5مرکزی وزراء کو ہٹاتے ہوئے یہ ثابت کرنا ہوگا کہ وہ مذہبی منافرت کے خلاف ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس مسئلہ پر صرف مباحث اور قرارداد کی منظوری کافی نہیں ہے بلکہ مرکزی وزراء گری راج سنگھ، سادھوی نرنجن جیوتی، مہیش شرما، وی کے سنگھ اور سنجے بالیاں کو کابینہ سے خارج کردیا جائے۔ باوثوق ذرائع نے بتایا کہ وزیر پارلیمانی اُمور ایم وینکیا نائیڈو نے کل اپنی قیامگاہ پر تمام این ڈی اے ( قومی جمہوری اتحاد ) کے قائدین سے ملاقات کریں گے اور ایوان کی کارروائی، حلیف جماعتوں میں تال میل اور اپوزیشن پارٹیوں کی جانب سے اٹھائے جانے والے مسائل پر تبادلہ خیال اور لائحہ عمل کو قطعیت دیں گے۔

علاوہ ازیں مسٹر نائیڈو اندرون ایک ہفتہ تمام  اپوزیشن قائدین سے ملاقات کریں گے اور لوک سبھا اسپیکر بھی اجلاس کے آغاز سے ایک یا دو دن قبل کُل جماعتی اجلاس طلب کرسکتے ہیں۔ بہار کے اسمبلی انتخابات کے نتائج میں بی جے پی کے صفایا کے ایک دن بعد وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ کی زیر قیادت مرکزی کمیٹی برائے پارلیمانی اُمور کا اجلاس 9نومبر کو منعقد ہوا تھا جس میں 26 نومبر تا 23ڈسمبر پارلیمانی اجلاس منعقد کرنے کا فیصلہ کیا گیا تھا۔ کلیدی نوعیت کے اصلاحات بلز کی منظوری میں اپوزیشن سے تعاون طلب کرتے ہوئے مسٹر وینکیا نائیڈو نے یہ اپیل کی کہ بہار کے انتخابی نتائج کو پارلیمنٹ میں ہنگامہ آرائی کا اختیار تصور نہ کریں۔ پارلیمانی اُمور پر مرکزی کمیٹی نے یہ بھی فیصلہ کیا ہے کہ 26نومبر 1949ء کو دستور ہند کے نفاذ کے تاریخی دن کی یاد میں پارلیمنٹ اجلاس کے ابتدائی دو ایام کے دوران خصوصی نشست کا  اہتمام کیا جائے تاکہ دلت رہنما اور معمار دستور ڈاکٹر بی آر امبیڈکر کو خراج عقیدت پیش کیا جاسکے۔ توقع ہے کہ اپوزیشن جماعتیں خصوصی نشست کے دوران ڈاکٹر امبیڈکر اور دیگر موضوعات کی حساسیت کے پیش نظر کوئی رکاوٹ پیدا نہیں کریں گے تاہم اپوزیشن جماعتیں، عدم تحمل، ایوارڈ واپسی، دادری کا بہیمانہ واقعہ، قیمتوں میں اضافہ اور مرکز ۔ ریاست تعلقات جیسے مسائل اٹھاسکتی ہیں۔ جنتا دل متحدہ لیڈر مسٹر تیاگی نے بتایا کہ ان کی جماعت حساس اور سنگین مسائل پر اپوزیشن کو متحد کرنے کی کوشش کرے گی۔ واضح رہے کہ پارلیمنٹ کا مانسون اجلاس اپوزیشن کی مسلسل ہنگامہ آرائی اور شور وغل کی نذر ہوگیا جس کے باعث متعدد اہم بلز، اراضیات بل اور گڈس اینڈ سرویس ٹیکس بل منظور نہیں ہوسکا تھا۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT