Wednesday , July 26 2017
Home / شہر کی خبریں / اپوزیشن کی حکومت پر تنقیدیں مسترد ، کانگریس و تلگو دیشم قائدین کو محاسبہ کرنے پر زور

اپوزیشن کی حکومت پر تنقیدیں مسترد ، کانگریس و تلگو دیشم قائدین کو محاسبہ کرنے پر زور

اسمبلی میں مسائل پر بحث کے لیے حکومت تیار ، ٹی آر ایس لیجسلیچر پارٹی قائدین کی پریس کانفرنس
حیدرآباد۔6 مارچ (سیاست نیوز) ٹی آر ایس لیجسلیچر پارٹی میں اپوزیشن کی جانب سے حکومت پر کی جارہی تنقیدوں کو مسترد کردیا اور الزام عائد کیا کہ اپوزیشن قائدین ریاست کی ترقی میں رکاوٹ پیدا کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔ ارکان اسمبلی وینکٹیشور ریڈی، جی بال راجو، کے پربھاکر ریڈی اور سرینواس گوڑ نے میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے اپوزیشن قائدین ڈی کے ارونا، ناگم جناردھن ریڈی اور ریونت ریڈی پر تنقید کی اور کہا کہ یہ قائدین حکومت پر تنقید سے قبل اپنا محاسبہ کریں۔ انہیں ریاست کی ترقی اور پراجیکٹس کی تکمیل کی بجائے سیاسی مقصد براری کی فکر ہے۔ ارکان اسمبلی نے کہا کہ ریاست کے آبپاشی پراجیکٹس کی تعمیر میں رکاوٹ پیدا کرنا دراصل تلنگانہ عوام سے دشمنی کے مترادف ہے اور عوام خود ان قائدین کو سبق سکھائیں گے۔ ارکان اسمبلی نے کہا کہ کانگریس اور تلگودیشم دور حکومت میں جب تلنگانہ کی ترقی کو نظرانداز کردیا گیا اس وقت یہ قائدین خاموش تماشائی بنے رہے۔ اپنے عہدوں کو بچانے کے لیے ان قائدین نے کبھی بھی حکمرانوں کے خلاف آواز نہیں اٹھائی۔ آندھرائی حکمرانوں نے ہر شعبہ میں تلنگانہ کو نظرانداز کیا۔ وینکٹیشور ریڈی نے صدرپردیش کانگریس اتم کمار ریڈی پر الزام عائد کیا کہ وہ پراجیکٹس کے بارے میں حقائق کو توڑ مروڑ کر پیش کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے موجودہ ضروریات کو دیکھتے ہوئے آبپاشی پراجیکٹس کی ریڈیزائننگ کی ہے اور ٹینڈر میں مکمل شفافیت سے کام لیا گیا۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ کانگریس دور حکومت میں پراجیکٹس کے ٹینڈر میں کئی بے قاعدگیاں منظر عام پر آئی ہیں۔ وینکٹیشور ریڈی نے کہا کہ وزیر آبپاشی ہریش رائو کی مساعی سے محبوب نگر میں ایک لاکھ ایکڑ اراضی کو سیراب کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ ناگم جناردھن ریڈی محبوب نگر میں ترقیاتی کاموں کو دیکھنے کے باوجود جھوٹ سے کام لے رہے ہیں۔ آبپاشی پراجیکٹس کی تعمیر روکنے کے لیے عدالت میں درخواست داخل کی گئی۔ جی بالراجو نے کہا کہ وزیر آبپاشی ہریش رائو جو پراجیکٹس کی تعمیر میں خصوصی دلچسپی لے رہے ہیں، ان کے خلاف الزام تراشی مناسب نہیں ہے۔ ڈی کے ارونا اور دیگر قائدین کو الزام تراشی سے باز آنا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ اسمبلی اجلاس میں حکومت تمام مسائل پر مباحث کے لیے تیار ہیں اگر کانگریس اور تلگودیشم قائدین کے پاس کوئی ٹھوس ثبوت ہو تو وہ اسمبلی میں پیش کرے۔ پربھاکر ریڈی نے کہا کہ اپوزیشن جماعتوں کے پاس الزام تراشی کے علاوہ کچھ نہیں اور عوام میں ان جماعتوں کے تعلق سے پائی جانے والی ناراضگی دور کرنے کے لیے حکومت کو نشانہ بنایا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ عوام نے ان جماعتوں کو ہمیشہ کیلئے مسترد کردیا ہے۔ رکن اسمبلی سرینواس گوڑ نے کہا کہ تقریباً 30 برسوں تک سیاسی میدان میں رہنے والے قائدین نے محبوب نگر ضلع کی ترقی کیلئے کچھ نہیں کیا۔ ناگم جناردھن ریڈی اور ڈی کے ارونا کو محبوب نگر ضلع کی ترقی کیلئے اپنے کارناموں کی وضاحت کرنی چاہئے۔ سرینواس گوڑ نے اپوزیشن کو چیلنج کیا کہ وہ اسمبلی میں آبپاشی پراجیکٹس اور خاص طور پر محبوب نگر کے پراجیکٹس پر مباحث کے لیے تیار ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT