Thursday , June 29 2017
Home / ہندوستان / اپوزیشن کی پریس کانفرنس میں سی پی آئی ایم کی عدم شرکت

اپوزیشن کی پریس کانفرنس میں سی پی آئی ایم کی عدم شرکت

باہمی مشاورت اور تعاون کے فقدان کی شکایت، کانگریس کے طلب کردہ اجلاس سے ترک تعلق کا فیصلہ
کولکتہ۔26 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) اپوزیشن کے اتحاد میں دراڑیں نظر آرہی ہیں جبکہ سی پی آئی ایم نے آج فیصلہ کیا کہ اپوزیشن کی پریس کانفرنس سے تک تعلق کیا جائے۔ یہ پریس کانفرنس کانگریس کی جانب سے طلب کی گئی تھی اور کہا گیا تھا کہ باہمی تعاون اور مشاورت کا اتحاد میں شریک پارٹیوں کے درمیان فقدان پایا جاتا ہے۔ سی پی آئی ایم کے جنرل سکریٹری سیتارام یچوری نے ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ ہم نے فیصلہ کیا ہے کہ اپوزیشن پارٹیوں کی پریس کانفرنس سے جو کانگریس نے طلب کی ہے ترک تعلق کیا جائے کیوں کہ مناسب مشاورت اور تعاون پارٹیوں کے درمیان موجود نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ بیشتر پارٹیوں سے نہ تو مشورہ کیا گیا ہے نہ انہیں ایجنڈے کی اطلاع دی گئی ہے جو اس اجلاس کے لئے مقرر کیا گیا ہے۔ کئی اپوزیشن پارٹیوں کو اس اجلاس کے طریقہ کار کے بارے میں اور اس کو طلب کرنے کے انداز کے بارے میں ذہنی تحفظات ہیں۔ کانگریس اپوزیشن کو راہول گاندھی کی جانب سے وزیراعظم پر شخصی کرپشن کے الزامات کے سلسلہ میں متحد کرنے کی کوشش کررہی ہے تاکہ مشترکہ پریس کانفرنس میں منصوبہ بندی کی جاسکے۔ صدر کانگریس سونیا گاندھی اور دیگر اپوزیشن قائدین 27 ڈسمبر کو مشترکہ پریس کانفرنس میں شرکت کریں گے۔ یچوری نے کہا کہ وہ جاننا چاہتے ہیں کہ اس اجلاس کا ایجنڈہ اور لائحہ عمل کیا ہوگا۔ کیا تمام اپوزیشن پارٹیوں کو اس میں شرکت کی دعوت دی گئی ہے۔ کیوں کہ انہیں تو اب تک کوئی دعوت وصول نہیں ہوئی۔ اس سوال پر کہ کیا پریس کانفرنس سے ترک تعلق کے فیصلے سے بی جے پی کیمپ کو گولہ بارود حاصل نہیں ہوگا۔ یچوری نے کہا کہ جب آپ چاہتے ہیں کہ اپوزیشن متحد ہو۔ اس میں 16 پارٹیاں شامل ہوں تو پارلیمانی سطح سے سیاسی سطح تک آپ کو مشاورت اور تبادلہ خیال کرنا ضروری ہے۔ اپوزیشن کی قیادت سے مشاورت کے بعد ہی مناسب مشاورت پر مبنی فیصلہ ممکن ہے۔ لیکن بدبختانہ بات یہ ہے کہ ایسا نہیں کیا گیا۔ سینئر قائد نے نوٹ کیا کہ اپوزیشن پارٹیوں کے اتحاد نے پیش رفت کے لئے سی پی آئی ایم کی جانب سے 1996 کے متحدہ محاذ حکومت اور یو پی اے کی پہلی حکومت قائم کی گئی تھی۔ یچوری نے اظہار حیرت کیا کہ صرف چیف منسٹر مغربی بنگال ممتا بنرجی کو کانفرنس میں شرکت کی دعوت دی گئی ہے۔ تریپورہ اور بہار کے چیف منسٹروں کو دعوت نہیں دی گئی اور نہ این سی پی کی قیادت سے مناسب مشورت کی گئی ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT