Tuesday , May 30 2017
Home / ہندوستان / اپہار آتشزدگی : گوپال انسل کی درخواست مسترد

اپہار آتشزدگی : گوپال انسل کی درخواست مسترد

مابقی جیل کی سزاء پوری کرنے کیلئے خودسپردگی اختیار کرنے سپریم کورٹ کا حکم

نئی دہلی ۔ 9 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) ریئل اسٹیٹ کے تاجر گوپال انسل کو خودسپردگی اختیار کرنی ہوگی تاکہ اپہار آتشزدگی سانحہ مقدمہ کے سلسلہ میں مابقی ایک سال جیل کی سزاء پوری کی جاسکے۔ سپریم کورٹ نے آج گوپال انسل اور ان کے بڑے بھائی سشیل انسل کی درخواست مسترد کردی۔ جسٹس رنجن گوگوئی کی زیرقیادت تین ججس پر مشتمل بنچ نے کہا کہ گوپال انسل کی دائر کردہ درخواست مسترد کی جاتی ہے۔ جسٹس گوگوئی نے 9 فبروری کو 2:1 اکثریتی فیصلہ میں 76 سالہ سشیل انسل کو صحت کی بنیادوں پر راحت فراہم کی بنچ نے ان کی عمر کا لحاظ رکھتے ہوئے صحت متاثر ہونے کے اندیشہ کے بناء یہ راحت فراہم کی تاہم گوپال انسل کو مابقی جیل کی سزاء پوری کرنے کیلئے اندرون چار ہفتے خودسپردگی اختیار کرنے کا حکم دیا تھا۔ گوپال نے اس کے بعد سپریم کورٹ میں درخواست دائر کرتے ہوئے امتیازی رویہ کی بنیاد پر اس حکمنامے میں ترمیم کی خواہش کی تھی۔ انہوں نے کہا کہ وہ 69 برس کے ہیں اور اگر انہیں جیل بھیج دیا جائے تو پھر ان کی صحت کافی حدتک بگڑ سکتی ہے۔ بنچ میں شامل جسٹس کورین جوزف اور جسٹس آدرش کمار گوئل نے اس درخواست کو مسترد کردیا۔ سینئر وکیل رام جیٹھ ملانی نے گوپال انسل کی نمائندگی کرتے ہوئے عدالت کو بتایا کہ 9 فبروری کو جاری کردہ حکم نامہ کے مطابق گوپال کو مابقی جیل کی سزاء پوری کرنے کیلئے اندرون چار ہفتے خودسپردگی اختیار کرنی ہے اور یہ مدت آج ختم ہورہی ہے۔ جیٹھ ملانی نے بنچ سے کہاکہ خودسپردگی کیلئے گوپال انسل کو وقت دیا جائے۔ بنچ نے کہا کہ گوپال انسل مابقی سزاء پوری کرنے کیلئے 20 مارچ کو خودسپردگی اختیار کریں۔ اپہار سنیما میں 13 جون1997ء کو ہندی فلم ’’بارڈر‘‘ کی نمائش کے دوران اچانک آگ لگ گئی تھی جس میں 59 افراد ہلاک ہوگئے تھے۔ قبل ازیں اپہار سانحہ کے متاثرین کی تنظیم نے سپریم کورٹ سے رجوع ہوکر سشیل انسل کو سزاء کے حکمنامہ میں ترمیم کی خواہش کی تھی۔ اس تنظیم کی قیادت نیلم کرشنا مورتی کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سشیل اور گوپال انسل دونوں صحتمند ہیں اور انہیں مابقی سزاء پوری کرنے کیلئے جیل بھیج دیا جانا چاہئے۔ تنظیم نے اپنی درخواست میں کہاکہ سشیل انسل نے طبی مسائل کے بارے میں جو بات کی ہے اس تعلق سے وہ اپنی اپیل یا درخواست نظرثانی کے موقع پر کوئی ٹھوس ثبوت پیش نہیں کرسکے۔ لہٰذا انہیں مابقی سزاء پوری کرنے کیلئے جیل بھیج دیا جانا چاہئے۔ متاثرین نے گوپال انسل کی درخواست کی بھی مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ سی بی آئی اور ہماری تنظیم کی درخواست نظرثانی پر فیصلہ ہوچکا ہے اور اب کسی طرح کی نظرثانی نہیں کی جاسکتی۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT