Saturday , September 23 2017
Home / جرائم و حادثات / اکبراویسی حملہ کیس : ایک گواہ بیان سے منحرف

اکبراویسی حملہ کیس : ایک گواہ بیان سے منحرف

’’محمد پہلوان نے حملہ کے وقت میرا موبائیل استعمال نہیں کیا تھا‘‘
بطور شہادت پولیس کی پیش کردہ دستاویز پر دستخط سے لاعلمی،عدالت میں صالح بِالیشرم کا بیان
حیدرآباد۔ 8 مارچ (سیاست نیوز) اکبر اویسی حملہ کیس کی سماعت کے دوران آج ایک گواہ اپنے بیان سے منحرف ہوگیا جس کے نتیجہ میں سرکاری وکیل نے اس پر جرح کیا۔  گواہ استغاثہ عبدالقادر صالح بلیشرم نے اپنے بیان میں عدالت کو یہ بتایا کہ پولیس کو دیئے گئے بیان میں اس نے یہ نہیں کہا تھا کہ اکبرالدین اویسی پر حملے کیس میں گرفتاری کے وقت محمد پہلوان نے اس کا  موبائیل فون 9391030634 استعمال کیا تھا اور اس نے اس بات کی بھی وضاحت کی ہے کہ ملزمین اس کے قریبی رشتہ دار ہونے کے سبب اپنے بیان سے منحرف ہورہے ہیں۔ عبدالقادر صالح بلیشرم نے اپنے بیان میں یہ بھی واضح طور پر بتایا کہ بعض دستاویزات جنہیں شواہد کے طور پر پولیس نے عدالت میں داخل کیا ہے ، اس پر موجود مہر اور دستخط کے بارے میں وہ لاعلم ہیں اور دستاویزات محض فوٹو کاپی ہیں۔ انہوں نے 14 سال قبل ریلائینس موبائل فون کا کنکشن حاصل کیا تھا اور اور بیرون ممالک روانہ ہونے سے قبل اپنے سی ڈی ایم اے موبائیل فون کو قریبی رشتہ دار محمد بن صالح واھلان کے حوالے کیا تھا۔ سرکاری وکیل نے گواہ استغاثہ کو منحرف گواہ ہونے کا اعلان کیا ۔ نامپلی کریمنل کورٹ کے ساتویں  ایڈیشنل میٹروپولیٹن سیشن جج کے اجلاس پر روانہ کی اساس پر جاری اکبراویسی حملہ کیس کی سماعت جاری ہے اور کل بھی مزید گواہوں کے بیانات قلمبند کئے جائیں گے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT