Thursday , September 21 2017
Home / شہر کی خبریں / اکبر اویسی حملہ مقدمہ میں پنچ گواہ کا بیان قلمبند

اکبر اویسی حملہ مقدمہ میں پنچ گواہ کا بیان قلمبند

ملزمین کے ملبوسات کی نشاندہی ، وکیل دفاع کا جرح
حیدرآباد ۔ /10 نومبر (سیاست نیوز) چندرائن گٹہ حملہ کیس کی سماعت کے موقع پر آج ایک پنچ گواہ نے عدالت میں اپنا بیان قلمبند کروایا اور عبداللہ بن یونس یافعی اور عود یافعی کے ملبوسات کی نشاندہی کی ۔ ملک پیٹ کے ساکن 40 سالہ شیخ  احمد نے ساتویں ایڈیشنل میٹروپولیٹین سیشن جج کے روبرو اپنا بیان قلمبند کروایا جس میں یہ بتایا کہ اسے پولیس نے ملک پیٹ یشودھا ہاسپٹل طلب کیا تھا اور اس کی موجودگی میں عبداللہ یافعی اور عود کے مختلف ملبوسات کو ضبط کیا ۔ وکیل دفاع ایڈوکیٹ جی گرومورتی نے گواہ پر جرح کیا اور اس سے مختلف سوالات کئے ۔ جرح کے دوران شیخ احمد نے انکشاف کیا کہ وہ اردو میڈیم سے دسویں جماعت تک کی تعلیم حاصل کی ہے  چنانچہ انگلش میں تحریر کردہ پنچ نامہ میں موجود متن سے وہ لاعلم ہے ۔ گواہ نے اس کیس کے ایک ملزم کی ضبط شدہ بنیان میں موجود سوراخ پر تضاد پایا گیا ۔ اس نے بتایا کہ بنیان میں جملہ 4 سوراخ موجود ہے جبکہ تحقیقاتی عہدیدار نے ضبطی کے دوران 2 سوراخ موجود ہونے کی بات بتائی تھی ۔ جرح کے دوران گواہ کے بیان میں ایک اور تضاد پایا گیا ۔ اس نے پہلے بتایا کہ سکیورٹی آفیسر نے انسپکٹر کو ملزمین کے ضبط شدہ ملبوسات حوالے کئے جبکہ ایک اور مرتبہ اسی سوال کا جواب دیتے ہوئے بتایا کہ سکیورٹی گارڈ نے انسپکٹر کو ملبوسات حوالے نہیں کئے ۔ شیخ احمد نے خود کو مجلس پارٹی کارکن ہونے کی تردید کی ۔

TOPPOPULARRECENT