Monday , September 25 2017
Home / Top Stories / اکھلیش یادو گجرات کے گدھوں سے خوفزدہ: وزیراعظم

اکھلیش یادو گجرات کے گدھوں سے خوفزدہ: وزیراعظم

انتخابات میں مخالفین ایک دوسرے پر تنقید کرتے ہیں، چیف منسٹر یو پی نے گدھوں پر تنقید کرکے اپنے خوف کو ظاہر کیا ہے
بہرائچ(یوپی) ۔23 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم نریندر مودی نے آج کہا کہ انہیں حیرانی ہے کہ چیف منسٹر اترپردیش اکھلیش یادو گجرات کے گدھوں سے ’’خوفزدہ‘‘ ہیں۔ لیکن وہ اپنے حصے کے طور پر جانوروں سے وفاداری رکھتے ہیں اور ان کی سخت محنت سے متاثر ہیں۔ چیف منسٹر اترپردیش کی جانب سے تین دل قبل رائے بریلی میں ایک انتخابی جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے گدھوں پر کئے گئے ریمارک کا جواب دیتے ہوئے وزیراعظم نریندر مودی نے کہا کہ اکھلیش یادو نے گدھوں پر تنقید کرکے ظاہر کردیا ہے کہ وہ پسماندہ ذہنیت رکھتے ہیں اور ان میں احساس کمتری پائی جاتی ہے جو ان کے عہدے کے شایان شان نہیں ہے۔ وزیراعظم مودی نے مزید کہا کہ انتخابات کے دوران حریفوں کے درمیان ایک دوسرے پر تنقیدیں ہوتی ہیں۔ اکھلیش جی میں آپ کی مشکل کو سمجھتا ہوں۔ اگر آپ نے مودی اور بی جے پی پر تنقید کی ہوتی تو اس سے آپ کی صلاحیت کا اندازہ ہوتا لیکن مجھے حیرانی ہے کہ آپ نے گدھوں کو نشانہ بنایا ہے۔ کیا آپ گجرات کے گدھوں سے ڈرتے ہیں جو آپ سے کوسوں میل دور یہ گدھے رہتے ہیں۔ بی جے پی کی فتح ریالی سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ اس ملک کے عوام ہی میرے آقا ہیں۔ میں ان گدھوں سے بھی سبق حاصل کرتا ہوں۔ کیوں کہ یہ لوگ سخت محنت کرتے ہیں۔ میں بھی عوام کے لیے دن رات محنت کرتا ہوں۔ یہ گدھے اپنے آقا کے ساتھ وفاداری رکھتے ہیں۔ مجھے اس بات پر حیرانی ہے کہ اکھلیش جی اپنی ذہنیت کی اختراع کو یوں سامنے لایا ہے اور جانوروں پر اپنا غصہ نکال رہے ہو۔

کیا آپ کو معلوم ہے کہ گدھے بہت خراب ہوتے ہیں؟ یہ فطری بات ہے کیوں کہ آپ کی حکومت بھی کارکردگی کے لحاذ سے عوام کے سامنے آشکار ہوچکی ہے۔ اب پوری حکومت کا ہی صفایا ہوجائے گا تو یہ لوگ بھینسوں کی تلاش میں نکلیں گے۔ بھینسوں سے متعلق ان کا یہ اشارہ سماج وادی پارٹی کے لیڈر اعظم خان کی جانب تھا جو رام پور میں لاپتہ ہوگئے تھے ان بھینسوں کو پولیس نے ڈھونڈ نکالا تھا۔ آپ کی حکومت کی یہی تو پہچان ہے لیکن آپ کو یہ معلوم نہیں کہ گدھے بھی ہمیں سبق سکھاتے ہیں۔ اگر ہمارا دل اور دماغ صاف ہے تو ہم بہت کچھ سیکھ سکتے ہیں۔ ہمیں گدھوں سے سبق سیکھنا چاہئے کیوں کہ یہ اپنے آقا کے وفادار ہوتے ہیں۔ نریندر مودی نے کہا کہ اکھلیش جی اس ملک کے 125 کروڑ عوام میرے آقا ہیں اور میں ان ہی کی دن رات خدمات کررہا ہوں۔ کانگریس کے ساتھ سماج وادی پارٹی کے اتحاد کے بارے میں انہوں نے کہا کہ یہ اتحاد ان کے لیے موزوں نہیں تھا لیکن یو پی اے حکومت کی پرانی دوست کے ساتھ اتحاد کرکے اپنی شبیہ متاثر کرلی ہے۔ کانگریس اور سماج وادی پارٹی کے درمیان اس موقع پرستانہ اتحاد کے خلاف اپنی تنقیدوں کو جاری رکھتے ہوئے وزیراعظم نے اکھلیش یادو کے حالیہ دیئے گئے ایک انٹرویو کا حوالہ دیا جس میں یادو نے کہا تھا کہ انہوں نے خاندانی جھگڑے کے باعث مجبوراً یہ اتحاد کیا ہے۔ جبکہ ان کے خاندان کے تمام بزرگ ارکان مل کر انہیں شکست دینے کی کوشش کررہے ہیں۔ کیا تم اپنے ہی خاندان کی سازشوں سے بچ سکتے ہو؟ یہ لوگ تمہیں ڈوبودیں گے۔ کانگریس خود تو ڈوب چکی ہے ، سماج وادی پارٹی کو بھی لے ڈوبے گی۔ جو لوگ 27 سال یو پی بحال کے نعرے کے ساتھ یاترا نکال رہے ہیں ایسے میں یو پی کا مستقبل کیسا ہوگا عوام اس کا اندازہ خود کریں۔

TOPPOPULARRECENT