Sunday , September 24 2017
Home / Top Stories / اکھیلیش سنگھ کی علیحدگی قیادت کی غلطی ۔ رام گوپال یادو

اکھیلیش سنگھ کی علیحدگی قیادت کی غلطی ۔ رام گوپال یادو

چیف منسٹر کی حمایت ۔ پارٹی میں بحران کی تردید ۔ غلط فہمیوںکی وجہ سے مسائل پیدا ہونے کا دعوی

لکھنو 15 ستمبر ( سیاست ڈاٹ کام ) سماجوادی پارٹی سربراہ ملائم سنگھ یادو کے خاندان میں جاری اختلافات کے دوران سماجوادی پارٹی لیڈر رام گوپال یادو نے آج کہا کہ پارٹی قیادت نے اکھیلیش سنگھ یادو کو پارٹی کے یو پی صدر کی حیثیت سے برخواست کرتے ہوئے ایک غلطی کی ہے اور جو اختلافات ہیں وہ کچھ غلط فہمیوں کی وجہ سے پیدا ہوئے ہیں۔ رام گوپال یادو پارٹی کے قومی جنرل سکریٹری اور ملائم سنگھ کے رشتہ کے بھائی ہیں۔ انہوںن ے یہاں چیف منسٹر اکھیلیش سنگھ سے ملاقات کرتے ہوئے صورتحال پر قابو پانے کی کوشش کی جبکہ چیف منسٹر نے اپنے چچا اور کابینی وزیر شیوپال سنگھ یادو کو کابینہ میں اہم قلمدانوں سے معزول کردیا تھا ۔ اس سے چند گھنٹے قبل ملائم سنگھ یادو نے اکھیلیش کو پارٹی کی یو پی صدارت سے ہٹا کر شیوپال سنگھ یادو کو یہ ذمہ داری سونپ دی تھی ۔ رام گوپال یادو نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ کچھ معمولی باتوں پر اختلافات ہوئے ہیں۔ انہیں حل کیا جاسکتا ہے ۔ قیادت نے اکھیلیش کو پارٹی قیادت سے ہٹا کر ایک غلطی کی ہے تاہم یہ غلطی عمدا نہیں ہے ۔ رام گوپال یادو چیف منسٹر اکھیلیش سے قریبی تعلقات رکھتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اکھیلیش کو استعفی دینے کیلئے کہا جانا چاہئے تھا اور وہ ضرور ایسا کردیتے ۔ ان سے کہا جاسکتا تھا کہ اب انتخابات آ رہے ہیں۔ انہیں چیف منسٹر برقرار رہنا چاہئے اور پارٹی کی ریاستی قیادت کی ذمہ داری ان سے لے کر شیوپال سنگھ کو دی جاسکتی ہے ۔

کچھ غلط فہمیاں ہوئی ہیں اور اس سے زیادہ کچھ نہیں ہے ۔ انہوں نے واضح کیا کہ پارٹی میں کوئی بحران نہیں ہے ۔ کئی وقت ایسے فیصلے کئے جاتے ہیں جن سے کچھ لوگ ناراض ہوتے ہیں اور یہی مسئلہ پارٹکی میں ہے ۔ اس کے علاوہ کچھ نہیں ہے ۔ ایسا تقریبا تمام جماعتوں میں مختلف حالات کے تحت ہوتا ہے ۔ اس سوال پر کہ چیف منسٹر کا کہنا ہے کہ کچھ فیصلے انہوں نے اپنے طور پر کئے ہیں رام گوپال نے کہا کہ جو کوئی بھی فیصلے ہوئے ہیں وہ ملائم سنگھ کے مشورہ سے ہوئے ہیں۔ چیف منسٹر کا کہنا ہے کہ انہوں نے کچھ فیصلے اپنے طور پر کئے ہیں۔ یہ کوئی غیر فطری بات نہیں ہے کہ اتر پردیش جیسی ریاست کا چیف منسٹر کچھ فیصلے اپنے طور پر کرے ۔ یہ فطری بات ہے ۔ انہیں فیصلے کرنے چاہئیں۔ ان اطلاعات پر کہ اکھیلیش کو پارٹی کا ورکنگ صدر بنایا جائیگا رام گوپال یادو نے کہا کہ یہ سب کچھ بیکار کی باتیںہیں ۔ جب ملائم سنگھ یادو صدر ہیں تو ایسی کوئی صورتحال نہیں ہوگی ۔ چیف منسٹر کے اس بیان پر کہ حالات میں کچھ بیرونی افراد کی مداخلت سے مسائل پیدا ہوئے ہیں رام گوپال نے کہا کہ وہ چیف منسٹر سے بات کرینگے کہ وہ کہنا کیا چاہتے ہیں۔ تاہم ایسا تاثر پارٹی ورکرس ‘ قائدین اور عوام میں بھی ہے ۔ پارٹی امور میں امر سنگھ کی مداخلت کے تعلق سے قیاس آرائیوں پر سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ جب یہ نتیجہ اخذ کرلیا گیا ہے کہ امر سنگھ مداخلت کر رہے ہیں تو وہ اس پر کیا کہہ سکتے ہیں۔ جو کچھ بھی حالات ہیں وہ ان پر بعد میں تبصرہ کرینگے ۔ شیوپال سنگھ یادو ‘ ملائم سنگھ کے چھوٹے بھائی ہیں اور کل انہوں نے دہلی میں ان سے ملاقات کی تھی ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT