Saturday , August 19 2017
Home / ہندوستان / ایئرٹیل، انڈیا پوسٹ کے بعد پے ٹی ایم کے بھی 23 مئی سے بینک آپریشنس

ایئرٹیل، انڈیا پوسٹ کے بعد پے ٹی ایم کے بھی 23 مئی سے بینک آپریشنس

وجئے شرما کو آر بی آئی کا لائسنس ۔ ویالٹ بیالنس ’پے ٹی ایم پے منٹس بینک لمیٹڈ‘ کو منتقل ہوجائیگا ۔ انفرادی اور چھوٹے کاروبار کے 1 لاکھ روپئے تک ڈپازٹس قابل قبول

نئی دہلی ، 17 مئی (سیاست ڈاٹ کام) کئی ماہ کی تاخیر کے بعد پے ٹی ایم (پے ٹی ایم ) اب اپنے پے منٹس بینک آپریشنس کی 23 مئی سے شروعات کیلئے پوری طرح تیار ہے جیسا کہ انھیں ریزرو بینک آف انڈیا (آر بی آئی) سے قطعی منظوری حاصل ہوچکی ہے۔ پے ٹی ایم نے عوام الناس کو اطلاع میں کہا کہ پے ٹی ایم پے منٹس بینک لمیٹیڈ (پے ٹی ایم ) کو آر بی آئی سے قطعی لائسنس مل گیا ہے اور وہ اپنی سرگرمیاں 23 مئی 2017ء کو شروع کرے گا۔ کمپنی اپنا ویالٹ بزنس جو زائد از 218 ملین موبائل ویالٹ یوزرس کا حامل ہے، نوتشکیل شدہ فرم ’’پی پی بی ایل‘‘ کو پے منٹس بینک لائسنس کے تحت منتقل کردے گی۔ یہ لائسنس مقیم ہندوستانی وجئے شیکھر شرما کو عطا کیا گیا، جو پے ٹی ایم کی ملکیت والے One97 Communications کے بانی ہیں۔ 23 مئی کے بعد پے ٹی ایم ویالٹ پی پی بی ایل کو منتقل ہوجائے گا۔ اگر کنزیومرس ایسا نہیں چاہتے ہیں تو انھیں پے ٹی ایم کو مطلع کرنا ہوگا، جو متعلقہ تفصیلات کے تبادلے پر ویالٹ کا بیالنس کنزیومر کے بینک اکاؤنٹ کو منتقل کردے گا۔ اس طرح کی اطلاع 23 مئی سے قبل دینا ہوگا۔ اگر ویالٹ گزشتہ چھ ماہ سے عدم سرگرمی کے ساتھ زیراستعمال نہ ہو تو پی پی بی ایل کو منتقلی صرف اسی وقت ہوگی جب کنزیومر اس ضمن میں خصوصیت سے آمادگی ظاہر کرے۔ پے منٹس بینکس انفرادی اشخاص اور چھوٹے کاروباروں سے 1 لاکھ روپئے فی اکاؤنٹ تک ڈپازٹس قبول کرسکتے ہیں۔

پے ٹی ایم نے دراصل گزشتہ سال دیوالی کے موقع پر آپریشنس شروع کرنے کا منصوبہ بنالیا تھا۔ 2015ء میں آر بی آئی نے اصولی طور پر وجئے شرما کو بھی 10 دیگر کے ساتھ پے منٹس بینک قائم کرنے کی منظوری عطا کردی تھی۔ اقتصادی شعبہ میں زیادہ سے زیادہ گوشوں کو شامل کرنے کے مقصد کے ساتھ آر بی آئی نے امتیازی بینک کاری کا دور شروع کرتے ہوئے SFBs (اسمال فینانس بینکس) اور PBs (پے منٹس بینکس) کو اجازت دی کہ سرویسیس کا آغاز کریں۔ جملہ 21 اداروں کو گزشتہ سال اصولی منظوری دی گئی، جن میں 11 کیلئے پے منٹس بینکس شامل ہیں۔ بعد میں تین کمپنیاں ٹیک مہندرا، کولامنڈلم انوسٹمنٹ اور فینانس کمپنی اور دلیپ شنگھوی، آئی ڈی ایف سی بینک اور ٹیلینار فینانشیل سرویسیس کا کنسورشیم پے منٹس بینک لائسنسنگ سے دستبرداری اختیار کرلئے۔ موجودہ طور پر صرف ایئرٹیل اور انڈیا پوسٹ نے ہی پے منٹس بینک آپریشنس شروع کئے ہیں۔ ادتیہ برلا آئیڈیا پے منٹس بینک بھی یہ سرویسیس جلد ہی شروع کرنے کی توقع ہے۔ پے ٹی ایم پے منٹس بینک میں وجئے شرما کے زیادہ حصص ہوں گے اور بقیہ علی بابا زیرسرپرستی One97 کمیونکیشنس کے پاس رہیں گے۔ تاہم پے منٹس بینک میں چینی کمپنی کے راست حصص نہیں ہوں گے۔ گزشتہ سال نومبر میں 500 روپئے اور 1000 روپئے قدر والی پرانی کرنسی نوٹوں کی منسوخی کا حکومتی اعلان ہونے کے بعد Paytm بڑا فائدہ اٹھانے والی کمپنیوں میں سے ایک رہی ہے کیونکہ بڑی تعداد میں لوگ ڈیجیٹل کرنسی کی طرف منتقل ہوئے۔ ویالٹ کمپنیوں جیسے Paytm اور Mobikwik نے استعمال کنندگان کے ساتھ ساتھ لین دین کی تعداد میں بھی کافی اضافہ درج کرایا ہے۔

TOPPOPULARRECENT