Monday , April 24 2017
Home / شہر کی خبریں / !ایس ایس سی پرچہ انگریزی کا واٹس اپ کے ذریعہ افشاء

!ایس ایس سی پرچہ انگریزی کا واٹس اپ کے ذریعہ افشاء

حیدرآباد۔21مارچ(سیاست نیوز) ایس ایس سی امتحانات کے مؤثر انعقاد کے سلسلہ میں حکومت کے تمام انتظامات کے باوجود آج کھمم میں مبینہ طور پر انگریزی پرچہ اول کا مبینہ طور پر واٹس اپ کے ذریعہ افشاء ہوا۔ اس واقعہ کے بعد دوبارہ امتحان کے انعقاد کے بارے میں تجسس پیدا ہوگیا لیکن رات دیر گئے حکومت نے وضاحت کردی کہ مکرر امتحان نہیں ہوگا کیوں کہ ابتدائی تحقیقات کے بعد پرچہ سوالات کا افشاء نہیں ہوا بلکہ یہ ایک امتحانی بے قاعدگی تھی۔ انگریزی کے پرچہ اول کے افشاء کا واقعہ ریاست کے سرحدی ضلع کھمم میں پیش آیا ہے لیکن اس کے اثرات ریاست بھر میں ہو سکتے ہیں کیونکہ پرچہ کا افشاء واٹس اپ کے ذریعہ کیا گیا ہے جو لمحوں میں کہیں تک بھی پہنچ سکتا ہے لیکن اس بات کا جائزہ لیا جا رہا ہے کہ کیا واقعی میں ایس ایس سی کے انگریزی پرچہ کا افشاء ہونے کے بعد اسے ریاست کے دیگر اضلاع تک پہنچایا گیا ہے۔ ڈسٹرکٹ ایجوکیشنل آفیسر کھمم مسزجھانسی لکشمی نے اس بات کی توثیق کی کہ کھمم میں انگریزی کے پرچہ اول کا افشاء ہوا ہے اور اس کے لئے واٹس اپ کا استعمال کیا گیا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ اس اطلاع کے موصول ہوتے ہی متعلقہ پولیس اسٹیشن میں شکایت درج کروادی گئی ہے اور اس بات کا جائزہ لیا جا رہا ہے کہ یہ واٹس اپ میسیج کے ذریعہ افشاء کیا گیا پیپر کہاں تک پہنچا ہے۔ کھمم میں 19ہزار 260ایس ایس سی طلبہ امتحان میں شرکت کررہے ہیں ۔ ڈسٹرکٹ ایجوکیشنل آفیسر نے کہا کہ ایس ایس سی پرچہ کے افشاء کے متعلق اطلاع پر پولیس میں شکایت کے ساتھ سی آئی ڈی تحقیقات کی بھی سفارش کردی گئی ہے۔ بتایاجاتا ہے کہ اس بات کی تحقیقات کی جا رہی ہے کہ یہ پرچہ کس مقام سے افشاء کیا گیا ہے اور واٹس اپ کے ذریعہ کھمم تک کس طرح پہنچا ہے۔ محکمہ تعلیم اور بورڈآف سیکنڈری کے عہدیداروں کا کہنا ہے کہ واٹس اپ پر اس پرچہ کی تصویر امتحان کے شروع ہونے کے اندرون چند منٹ میں گشت کرنے لگی جو کہ پرچہ کے افشاء کو ثابت کرتی ہے لیکن یہ نہیں کہا جا سکتا کہ پرچہ کھمم سے افشاء ہوا ہے یا کسی اور مقام سے کیونکہ پرچہ کے افشاء کا واقعہ کھمم کے محکمہ تعلیم کے علم میں آیا تو محکمہ تعلیم نے اس واقعہ کے خلاف پولیس میں شکایت درج کروادی گئی ہے۔واضح رہے کہ محکمہ تعلیم نے تمام امتحانی مراکز میں فون نہ لانے کی ہدایت اسی خدشہ کے تحت جاری کی تھی لیکن اس کے باوجودپرچہ کا افشاء تشویشناک ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT