Sunday , August 20 2017
Home / شہر کی خبریں / ایس سی ایس ٹی سب پلان و نئے آئی ٹی منصوبہ کو منظوری

ایس سی ایس ٹی سب پلان و نئے آئی ٹی منصوبہ کو منظوری

عمر قید کی سزا کاٹنے والے بعض مجرمین کو رہا کیا جائے گا ۔ ریاستی کابینہ کے فیصلے
حیدرآباد۔ 6 مارچ (سیاست نیوز) کابینہ نے ریاست میں ایس سی ایس ٹی سب پلان کو منظوری دیدی ہے ۔ علاوہ ازیں حکومت نے انفارمیشن ٹیکنالوجی سے متعلق نئے منصوبہ کو منظوری فراہم کردی ہے۔ ریاستی کابینہ نے آج بعض اہم فیصلوں میں آئی اے ایس آفیسرس اسوسی ایشن کیلئے 3 ایکر اراضی کو منظوری کے علاوہ تلنگانہ اسٹیٹ آئی آئی سی کیلئے رنگاریڈی 50 ایکر اراضی کی حوالگی کو منظوری دی۔ کابینہ کے اجلاس میں محکمہ روڈ ٹرانسپورٹ کارپوریشن کو 500 کروڑ روپئے قرض کے حصول کیلئے حکومت کی ضمانت دیئے جانے کو بھی منظوری دی گئی۔ عمر قید کی سزا کاٹ رہے مجرمین کی رہائی کو کابینہ نے منظوری دے دی ہے۔ کابینی اجلاس کے دوران مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد میں کامیابی پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا اور عوام کی توقعات پر پورا اُترنے کے اقدامات کو یقینی بنانے پر زور دیا گیا ۔ پڑوسی ریاست ِ مہاراشٹرا سے جاری 60 سالہ قدیم آبی تنازعہ کی یکسوئی پر کابینہ نے اظہار مسرت کیا۔ وزرا نے بلدی نظم و نسق کے مسودہ بل کو جاریہ بجٹ سیشن میں پیش کرنے کا فیصلہ کیا۔ اجلاس کے دوران مختلف اُمور پر کابینہ میں شامل وزرا نے تبادلہ خیال کیا۔ قبل ازیں چیف منسٹر چندر شیکھر راؤ نے راج بھون پہنچ کر گورنر ای ایس ایل نرسمہن سے ملاقات کی جہاں سے وہ کابینہ کے اجلاس میں شرکت کیلئے سیکریٹریٹ پہونچے۔ اجلاس کے دوران حکومت نے 10 مارچ سے شروع ہورہے بجٹ اجلاس کے پہلے دن گورنر کے خطبہ کو قطعیت دی۔ چیف منسٹر کی نگرانی میں منعقدہ اجلاس میں گورنر کے خطبہ کو قطعیت دینے کے علاوہ ’مشن بھاگیرتا‘ اور واٹر بورڈ کو ہڈکو سے علیحدہ علیحدہ 1900 کروڑ روپئے حاصل کرنے کی اجازت دے دی گئی ہے۔ اجلاس کی روئیداد سے واقف نہیں کروایا گیا۔ باوثوق ذرائع کی اطلاع کے بموجب ڈھائی گھنٹہ سے زیادہ چلے اجلاس کے دوران مختلف محکمہ جات کے بجٹ کے متعلق اُمور کا بھی جائزہ لیا گیا۔ بتایا جاتا ہے کہ محکمہ جاتی اساس پر بجٹ کی تخصیص اور دیگر اُمور پر تبادلہ خیال کے بعد بجٹ کو قطعیت دے دی گئی ہے۔ چیف منسٹر نے مختلف شعبوں و محکمہ جات کی کارکردگی کے متعلق تفصیلات حاصل کی۔ ریاست میں محکمہ آبپاشی کے پراجیکٹس کے متعلق تفصیلات حاصل کرکے پراجیکٹس کی تکمیل کے مراحل کا جائزہ لیا گیا۔ بتایا جاتا ہے کہ 10 مارچ سے شروع ہورہے بجٹ اجلاس میں حکومت کی حکمت عملی اور ایوان کی کارکردگی کو موثر بنانے کے متعلق بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔ کابینی اجلاس میں تمام وزراء شریک تھے جن میں ڈپٹی چیف منسٹرس محمد محمود علی ، کڈیم سری ہری کے علاوہ وزراء پدما راؤ ، ٹی سرینواس یادو ، این نرسمہا ریڈی ،ایم مہیندر ریڈی اور دیگر شامل ہیں۔

TOPPOPULARRECENT