Tuesday , March 28 2017
Home / سیاسیات / ایس پی اور کانگریس کا اتحاد کے باوجود امیتھی میں مقابلہ

ایس پی اور کانگریس کا اتحاد کے باوجود امیتھی میں مقابلہ

اتحاد کیلئے تشویش کی بات نہیں، دونوں پارٹیوں کا موقف
امیتھی (یوپی) ۔ 9 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) کانگریس اور سماج وادی پارٹی کے درمیان ماقبل چناؤ اتحاد سے قطع نظر سابق ریاستی وزیر امیتاسنہہ نے آج امیتھی نشست سے کانگریس امیدوار کی حیثیت سے اپنی نامزدگی داخل کی، جو نہایت اہم اترپردیش اسمبلی چناؤ کیلئے برسراقتدار پارٹی کو الاٹ کی گئی ہے۔ امیتا کے شوہر اور پردیش کانگریس کی پرچار ابھیان سمیتی کے صدرنشین سنجے سنہہ بھی موجود تھے جب سابقہ ریاستی وزیر برائے فنی تعلیم نے اپنے کاغذات نامزدگی امیتھی کے ضلع ہیڈکوارٹر گوری گنج میں کلکٹریٹ کے احاطہ میں متعلقہ کورٹ میں داخل کئے۔ سنجے کی سابقہ پہلی بیوی گریما سنہہ امیتھی نشست سے بی جے پی ٹکٹ پر چناؤ لڑ رہی ہے۔ امیتا ایسے امیدواروں کی فہرست میں تازہ اضافہ ہے جنہوں نے ایس پی اور کانگریس کے درمیان نشستوں کی تقسیم کا معاہدہ ہوجانے کے باوجود اپنی امیدواروں سے دستبرداری اختیار کرنے سے انکار کردیا ہے۔ ایس پی نے جسے امیتھی اسمبلی حلقہ ملا ہے، موجودہ ایم ایل اے اور متنازعہ لیڈر گائتری پرجاپتی کو کانگریس کے اس گڑھ سے ٹکٹ دیا ہے۔ ایس پی گوری گنج نشست سے بھی اپنے موجودہ ایم ایل اے کو کھڑا کرچکی ہے جہاں گذشتہ روز کانگریس کے محمد نعیم نے اپنی نامزدگی داخل کی۔ ایس پی ۔ کانگریس اتحاد کی عکاسی کرنے والا نعرہ ’’یو پی کو یہ ساتھ پسند ہے‘‘۔ اترپردیش میں ہر جگہ حقیقت کو پیش نہیں کررہا ہے اور وہاں بنیادی صورتحال کچھ اور ہے کیونکہ زائد از ایک درجن اسمبلی نشستوں پر ایس پی اور کانگریس مقابلہ آرائی کررہے ہیں۔ تاہم دونوں پارٹیوں نے اس کی اہمیت گھٹائی ہے جیسا کہ اے آئی سی سی جنرل سکریٹری غلام نبی آزاد نے کہا کہ جس وقت ایسا لگ رہا تھاکہ اتحاد نہیں ہوگا ایس پی امیدواروں نے اپنے کاغذات داخل کردیئے تھے اور بعض حلقوں سے وہ دستبردار ہونا چاہے لیکن غیریقینی حالات کے سبب ایسا نہیں کرسکے۔ 403 اسمبلی نشستوں میں سے ایس پی 298 اور کانگریس بقیہ 105 پر چناؤ لڑے گی۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT