Saturday , August 19 2017
Home / کھیل کی خبریں / ایشیا کپ ٹی 20 : ہند اور بنگلہ دیش کے درمیان آج فائنل

ایشیا کپ ٹی 20 : ہند اور بنگلہ دیش کے درمیان آج فائنل

ورلڈ کپ سے قبل اہم میچ جیتنے دھونی ٹیم کی توجہ، براعظم میں برتری پر مشرفے مرتضیٰ کی نظریں
میرپور۔ 5 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) ایشیا کپ ٹی 20 کرکٹ ٹورنمنٹ کا کل اتوار کو یہاں شیر بنگلہ اسٹیڈیم میں ناقابل تسخیر ہندوستانی ٹیم اور برصغیر میں برتری کے حصول کی خواہاں بنگلہ دیشی ٹیم کے درمیان کھیلا جائے گا۔ ہندوستانی ٹیم اپنی بہترین کارکردگی کے لامتناہی سلسلے کے ساتھ ہندوستان کا پلہ بھاری ہے، نیز آئی سی سی رینکنگ کے اعتبار سے بھی وہ کامیابی کے معاملے میں ترجیحی ٹیم کی حیثیت سے ابھری ہے، لیکن انتہائی مختصر ترین فورمیٹ کے اس کھیل میں ان باتوں کی نشاندہی کوئی اہمیت ہوسکتی ہے، کیونکہ محض ایک اوور سارے کھیل کو تبدیل کرسکتا ہے۔ ہر حتمی انجام کے کئی ضمنی انجام ہوا کرتے ہیں اور کل ہونے والا فائنل بھی اس سے زیادہ مختلف نہ ہوگا، جہاں دونوں ٹیموں کے درمیان مقابلہ میں چند معمولی امتحان بھی ہوں گے جو فائنل میچ کو دلچسپ بنائیں گے۔ خواہ وہ بھومرا کے حیرت انگیز عنصر کے خلاف تمیم اقبال کی یلغار ہو یا اشیش نہرہ کے کئی سال کے تجربہ کے خلاف جواں سال سومیا سرکار کا جارحانہ مظاہرہ ہو، یا فائنل کی لڑائی کے کافی دلچسپ لوازم ہیں۔ شبیر رحمن کی روایتی لیکن خطرناک بیٹنگ کے خلاف روی چندرن اشون کے ماہرانہ بولنگ حملے اور نوجوان تسکین احمد کے غیرمعمولی جوش و خروش کے خلاف روہت شرما کا فن و کاریگری میچ دیکھنے والے کرکٹ شائقین کی دلچسپی میں یقیناً اضافہ کرے گی۔ اس میچ میں مستفیض الرحمن کی کمی ضرور محسوس ہوگی جو زخموں کے سبب کھیل میں حصہ نہیں لے رہے ہیں۔

ہندوستانی کپتان مہیندر سنگھ دھونی نسبتاً ایک وسیع تصویر پر نظر رکھیں گے کیونکہ ایشیا کپ کا خطاب ان کے وطن میں ہونے والے آئی سی سی ورلڈ ٹی 20 ٹورنمنٹ کے آغاز سے قبل ایک کامل تیاری ہوگی لیکن دھونی کے مخالف ہم منصب مشرفے مرتضی اس حد تک بڑی تصویر پر نظر نہیں رکھیں گے کیونکہ ایشیائی چمپین کا خطاب ان کے ملک میں ٹی۔20 کرکٹ کے لئے ایک اہم لمحہ ضرور ہوگالیکن ورلڈ ٹی 20 کپ تک ان کی ٹیم کی رسائی کا شاید ہی کوئی امکان ہوسکتا ہے۔ علاوہ ازیں پُرفضاء ہندوستانی شہر دھرم شالہ میں ہونے والے ٹی۔ 20 کے کوالیفائنگ مرحلے میں نیدرلینڈز اور آئرلینڈ سے مقابلہ سے قبل بنگلہ دیشی ٹیم کو زبردست حوصلہ حاصل ہوگا۔ ہند و بنگلہ دیش کے درمیان ہونے والا فائنل دراصل ٹی۔ 20 کے ماہر اور کہنہ مشق کھلاڑیوں کا ایک ایسی ٹیم کی ایک ایسی ٹیم کے خلاف جنگ بھی ہے جو اپنا موقف مستحکم کرنے کیلئے مسلسل جدوجہد میں مصروف ہے۔

شیر بنگلہ دیش اسٹیڈیم میں بنگلہ دیش کے کٹر حامی 25,000 شائقین کا شوروغل بھی دھونی اور ان کی ٹیم کیلئے اس وقت آسان نہیں ہوگا جب مرتضی کے کھلاڑی ان کا سامنا کریں گے۔ دھونی، یوراج سنگھ اور ویراٹ کوہلی کیلئے کوئی بڑا فائنل کھیلنا کوئی نئی بات نہیں ہے۔ وہ پہلے بھی یہاں ایسے میچ کھیل چکے ہیں، لیکن مشرفے، شکیب الحسن، شبیر رحمن کو کسی فائنل جیتنے کا مزہ معلوم نہیں ہے اگرچہ 2012ء میں وہ اس کے بہت قریب آگئے تھے، لیکن آخری اوورس میں پاکستانی ٹیم نے اپنی کامیابی میں حائل آخری رکاوٹ کو عبور کرلیا تھا جو محمد اللہ ریاض کی طرف سے پیدا کی جارہی تھی۔ یہی محمد اللہ بنگلہ دیشی ٹیم کیلئے نازک وقتوں میں کام آنے والے اہم کھلاڑی ثابت ہوئے جنہوں نے انور علی کی ایک گیند پر باؤنڈری لگاتے ہوئے اپنی ٹیم (بنگلہ دیش) کو فائنل میں پہونچایا تھا، لیکن اس کے بعد دوسری بہترین ٹیم کو کسی نے بھی یاد نہیں رکھا۔ یہ بات دھونی بھی اچھی طرح جانتے ہیں۔ وہ (دھونی) ورلڈ ٹی۔ 20 ٹروفی کیلئے اپنے سفر کے آغاز سے قبل ایشیا کپ میں فاتح کی حیثیت سے ابھرنے کیلئے کوئی کسر باقی نہیں رکھیں گے۔ رواں ٹورنمنٹ میں ان دونوں ہی ٹیموں نے بہترین کھیل کا مظاہرہ کیا ہے لیکن ہندوستان ہر اعتبار سے ایک مکمل ٹیم نظر آتی ہے جس کا خود اس کے کپتان دھونی نے بھی دعویٰ کیا ہے۔ ایڈیلیڈ میں آسٹریلیا کے خلاف ٹی۔ 20 سیریز کے آغاز کے بعد ہندوستان نے 10 کے منجملہ 9 میچ جیت کر اپنی فتوحات کا سلسلہ جاری رکھا ہے لیکن 11 واں میچ حکمت عملی اور شاطرانہ چال کا ایک امتحان ثابت ہوگا کیونکہ یہ میچ بنگلہ دیشی سرزمین پر کھیلا جارہا ہے۔

TOPPOPULARRECENT