Tuesday , March 28 2017
Home / مذہبی صفحہ / ایمان کو مضبوط کرنا احیائے دین کا حصہ

ایمان کو مضبوط کرنا احیائے دین کا حصہ

حضرت پیرانِ پیر محبوب سبحانی قطب ربانی رحمۃ اللہ علیہ نے ارشاد فرمایا: اگر تو اللہ کی رحمت سے مایوس ہونے لگے تو سمجھ لے کہ تیرا یقین و ایمان بہت کمزور ہے ۔ ورنہ اللہ تعالیٰ نے اپنی شرطِ اطاعت کے ساتھ مومن سے جو وعدے کر رکھا ہے ان کی خلاف ورزی وہ ہرگز نہیں کرتا اور جب تیرے دل میں یقین و ایمان محکم ہو گیا تو اللہ تعالیٰ تجھے یوں خطاب فرمائے گا:آج کے دن تو ہمارا محبوب و مقرب ہے اور ہماری رحمتیں تیرا استقبال کرتی رہیں گی۔ یہ خطاب تجھ سے باربار ہوگا اور پھر تو خدا کے برگزیدہ بندوں میں سے ہوجائے گا اور درجہِ ایمان پر تیرا کوئی ارادہ و مطلب باقی نہ رہے گا او ر تو ارادئہ الہٰی کی موافقت ہی میں روحانی سرور محسوس کرے گا ۔اب تو اللہ کے سوا تمام دیگر چیزوں سے بے رغبت اور بے نیاز ہوگیا اور شرک کی تمام آلائشوں سے محفوظ ۔ اب تجھے اللہ کی طرف سے رتبہ تسلیم و رضا عطا ہوگا اور اس کی حمایت و خوشنودی کا تجھ سے وعدہ کیا جائے گا ۔ اللہ تعالیٰ کی ظاہری و باطنی نعمتیں تیرے لئے بسیط ہوجائیں گی اور تیرے کلام کو معمور حکمت کیا جائے گا۔ پھر تجھے دنیا و عقبیٰ میں جن و انس تمام مخلوقات میں محبوب و محترم بنایا جائے گاکیونکہ اللہ کی اتباع سے تونے مخلوق کو مطیع کر لیا ہے ۔اللہ کی محبت مخلوق کی محبت کی ضامن ہے اور اس کا قہر مخلوق میں بغض پیداکرتا ہے۔پھر دنیا میں تو نے جن چیزوں کی خواہش کی ہوگی اور تجھے نہ ملی ہوں تو ان کا عمدہ سے عمدہ معاوضہ تجھے آخرت میں دیا جائے گا۔ تجھے اللہ تعالیٰ کا قرب حاصل ہوگا اور جنت الماویٰ کی تمام برگزیدہ نعمتیں تجھے عطا کی جائیں گی۔ اگر تو نے دنیائے فانی میں رہتے ہوئے نفس کی لذت و شہوت سے اجتناب کیا اور خالصتاً اپنے معبود بر حق ہی کو اپنا قبلہِ مقصود بنایا تو اس جذبہِ توحید کی برکت سے تجھے اللہ تعالیٰ دنیا میں بھی اپنی جائز حلال نعمتوں سے وسعت کے ساتھ فیض یاب فرمائے گا اور عقبیٰ میں تجھے موحدین و صالحین کے ساتھ بلند درجات عطا فرمائے گا۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT