Tuesday , August 22 2017
Home / شہر کی خبریں / ایمسٹ افشاء کیس کا نیا موڑ

ایمسٹ افشاء کیس کا نیا موڑ

ملزمین سے رشوت لینے والے ڈی ایس پی اور کانسٹیبل معطل
حیدرآباد ۔ /20 اگست (سیاست نیوز) ایمسیٹ II ، 2016 ء پرچہ سوالات افشاء کیس نے آج اس وقت نیا موڑ اختیار کرلیا جب سی آئی ڈی سے وابستہ ڈپٹی سپرنٹنڈنٹ آف پولیس اور ہیڈ کانسٹبل کو ملزمین سے جبراً رشوت کی وصولی کے الزام میں معطل کردیا گیا ۔ ڈائرکٹر جنرل آف پولیس تلنگانہ مسٹر انوراگ شرما نے آج اس سلسلے میں احکامات جاری کرتے ہوئے سی آئی ڈی سے وابستہ ڈی ایس پی مسٹر بالو جادھو اور ہیڈ کانسٹبل اے سداشیو راؤ کو معطل کردیا اور ان کے خلاف جاری تحقیقات کے مکمل ہونے تک شہر حیدرآباد نہ چھوڑنے کی ہدایت دی ۔ تفصیلات کے بموجب مذکورہ ڈی ایس پی اور ہیڈ کانسٹبل نے سال 2016 ء کے سنسنی خیز ایم سیٹ کیس کے اہم ملزم گمڈی وینکٹیش سے ایک لاکھ روپئے بطور رشوت وصول کرلی اور مزید  ایک لاکھ کا مطالبہ کیا تھا ۔ اس سلسلے میں ڈی جی پی کو اطلاع ملنے پر تحقیقات کا حکم دیا گیا تھا اور ابتدائی تحقیقات میں مذکورہ عہدیداروں کو قصور وار پائے جانے پر انہیں فوری معطل کردیا گیا ۔ ریاستی پولیس سربراہ نے اپنے احکام میں یہ بتایا ہے کہ بالو جادھو اور سداشیو راؤ دوران مدت معطلی کے دوران حیدرآباد میں مقیم رہنے کی ہدایت دی ہے اور ان کی اجازت کے بغیر شہر نہ چھوڑنے کے واضح احکامات جاری کئے گئے ہیں ۔ معطل شدہ سی آئی ڈی عہدیداروں کی تادیبی کارروائی کی جارہی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT