Wednesday , September 20 2017
Home / شہر کی خبریں / ایمسیٹ II کے افشاء پر وزراء اور عہدیداروں کے خلاف کارروائی متوقع

ایمسیٹ II کے افشاء پر وزراء اور عہدیداروں کے خلاف کارروائی متوقع

 
چیف منسٹر کے سی آر سخت ناراض ، کڈیم سری ہری اور لکشما ریڈی کے سیاسی مستقبل کو خطرہ
حیدرآباد ۔ 3۔ اگست (سیاست  نیوز) تلنگانہ میں ایمسٹ II کے افشاء کا معاملہ بعض وزراء اور عہدیداروں کو اپنی لپیٹ میں لے سکتا ہے۔ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ ایک طرف افشاء سے سخت ناراض ہیں تو دوسری طرف وہ دو ریاستی وزراء اور بعض عہدیداروں کی کارکردگی سے مطمئن نہیں۔ باوثوق ذرائع نے بتایا کہ ڈپٹی چیف منسٹر و وزیر تعلیم کڈیم سری ہری اور وزیر صحت لکشما ریڈی کا سیاسی مستقبل اس اسکام کے سبب خطرہ میں پڑ سکتا ہے ۔ پارٹی کے اندرونی گوشوں اور اپوزیشن کی جانب سے چیف منسٹر پر مسلسل دباؤ پڑ رہا ہے کہ وہ دونوں وزراء کے خلاف کارروائی کرتے ہوئے انہیں کابینہ سے برطرف کردیں۔ سابق میں جب کبھی اس طرح کے معاملات منظر عام پر آئے ، متعلقہ وزراء نے استعفیٰ پیش کردیا تھا۔ ملک کے دیگر حصوں میں بھی امتحانی پرچوں کے افشاء کے بعد متعلقہ وزراء کے استعفوں کی روایت موجود ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے ایمسٹ II کے افشاء کے بعد جائزہ اجلاسوں میں دونوں وزراء کی کارکردگی پر عدم اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے اپنے متعلقہ محکمہ جات پر کنٹرول کرنے میں ناکامی پر برہمی ظاہر کی۔ بتایا جاتا ہے کہ چیف منسٹر خود بھی ان وزراء کی برقراری کے حق میں نہیں ہیں۔ تاہم وہ اس طرح کے اقدام کے ذریعہ اپوزیشن کو مستحکم کرنا نہیں چاہتے۔ چیف منسٹر کے قریبی ذرائع نے بتایا کہ مناسب وقت پر چیف منسٹر کوئی کارروائی کریں گے اور ہوسکتا ہے کہ کابینہ میں امکانی تبدیلیوں کے وقت ان وزراء کو علحدہ یا پھر ان کے قلمدان تبدیل کئے جاسکتے ہیں۔ ایمسٹ II کے افشاء کے بعد سے یہ دونوں وزراء تحقیقاتی سرگرمیوں سے دور ہیں اور چیف منسٹر کا دفتر راست طور پر اس معاملہ کی نگرانی کر رہا ہے۔ بتایا جاتاہے کہ دونوں وزراء نے ایمسٹ II کی منسوخی کے خلاف اپنی رائے دی اور استدلال پیش کیا کہ اس سے حکومت پر اپوزیشن کو تنقید کا موقع مل جائے گا۔ تاہم چیف منسٹر نے سی آئی ڈی تحقیقات کے انکشاف کی بنیاد پر امتحان منسوخ کرنے اور نیا امتحان منعقد کرنے کا فیصلہ کرلیا۔ واضح رہے کہ کڈیم سری ہری اور لکشما ریڈی ابتداء ہی سے مختلف تنازعات میں گھرے ہوئے ہیں۔ ڈپٹی چیف منسٹر اور وزیر تعلیم کی ذمہ داری سنبھالنے کے بعد سے سری ہری پر محکمہ تعلیم کی کارکردگی بہتر بنانے میں ناکامی کا الزام ہے۔ اس کے علاوہ ان کے اندازِ کارکردگی سے پارٹی قائدین خوش نہیں ہیں۔ اسی طرح لکشما ریڈی کے محکمہ صحت میں بڑے پیمانہ پر کرپشن کی شکایات کے بعد سے وہ ہمیشہ سرخیوں میں رہے۔ اب دیکھنا ہے کہ ایمسٹ II معاملہ میں چیف منسٹر وزراء کے خلاف کیا کارروائی کریں گے۔ اطلاعات کے مطابق چیف منسٹر نے بعض عہدیداروں کے تبادلہ کا فیصلہ کیا ہے اور سی آئی ڈی کی قطعی رپورٹ ملنے کے بعد بعض عہدیداروں کے خلاف کارروائی کی جاسکتی ہے۔

TOPPOPULARRECENT