Saturday , September 23 2017
Home / Top Stories / ایم بی بی ایس بی زمرہ کی کونسلنگ فوری ملتوی کرنے کا مطالبہ

ایم بی بی ایس بی زمرہ کی کونسلنگ فوری ملتوی کرنے کا مطالبہ

مسلم انتظامیہ کا فائدہ ،طلباء کا نقصان، اولیائے طلباء کی جناب زاہد علی خان سے نمائندگی

حیدرآباد ۔ 2 اگست (سیاست نیوز) ایم بی بی ایس میں بی زمرہ کی کونسلنگ آج سے شروع ہورہی ہے۔ حیدرآباد کے تین مسلم مائناریٹی کالجس میں بی زمرہ کے 40 فیصد نشستوں کے بجائے 50 فیصد کردی گئی جبکہ اس زمرہ کی فیس نان مائناریٹی پرائیویٹ میڈیکل کالجس میں 11 لاکھ ہے۔ وہاں 50 فیصد اے زمرہ ہے اور بی زمرہ، سی زمرہ کی 50 فیصد ہے جبکہ مسلم مائناریٹی میڈیکل کالجس کی بی زمرہ کی فیس 14 لاکھ اور سی زمرہ کی 28 لاکھ روپئے ہے۔ حکومت مسلم مائناریٹی میڈیکل کالجس کے ان زمرہ جات کی فیس میں اضافہ کیا اور انتظامیہ کا فائدہ کیا لیکن طلبہ کا زبردست نقصان کرتے ہوئے 50 فیصد ایم بی بی ایس کی نشستیں کم کردی۔ اب بی زمرہ کی کونسلنگ کو فوری ملتوی کیا جائے یا کم از کم مسلم مائناریٹی کالجس کے بی زمرہ کے 10 فیصد نشستوں پر داخلے کو فوری روک دیا جائے گا۔ ایسے طلباء اور اولیائے طلبہ جن کا داخلہ ایم بی بی ایس میں یقینی تھا ۔ انہوں نے بے حد مضطرب حالت میں جناب زاہد علی خان ایڈیٹر سیاست سے نمائندگی کی ہے اور پرزور انداز میں حکومت سے مطالبہ کرتے ہوئے دباؤ ڈال کر معصوم مسلم ذہن طلبہ کا حق اور انصاف دلانے کی اپیل کی۔ جناب زاہد علی خان نے سنجیدگی کے ساتھ نمائندگی سماعت کرتے ہوئے چیف منسٹر سے تحریری نمائندگی کیلئے طلباء و سرپرستوں کا محضر پیش کیا۔ دفتر سیاست کے محبوب حسین جگر ہال میں اولیائے طلباء کی جناب ایم اے حمید کیریئر کونسلر سیاست اور جناب منظوراحمد نے مکمل رہنمائی اور شخصی کونسلنگ کرتے ہوئے طالب علم کے رینک کے ساتھ تحریری نمائندگیاں موصول کی۔ اس تحریری نمائندگی کو جناب زاہد علی خان کی زیرنگرای حکومت تلنگانہ کے وزیرداخلہ نائی نرسمہا ریڈی کے حوالہ کیا اور چیف منسٹر کو پیش کیا گیا۔ وزیرصحت کو بھی اس مکتوب کی کاپی دی گئی۔

TOPPOPULARRECENT